Monday , October 23 2017
Home / شہر کی خبریں / پرانے شہر سے سرکاری دفاتر کی منتقلی، عہدیداروں کا متعصبانہ رویہ

پرانے شہر سے سرکاری دفاتر کی منتقلی، عہدیداروں کا متعصبانہ رویہ

حیدرآباد 20 ستمبر (سیاست نیوز) پرانے شہر کے مختلف علاقوں کو سرکاری طور پر نظرانداز کرنے کی شکایات عام ہیں لیکن ان شکایات کے پس پردہ ایسا محسوس ہوتا ہے کہ خود سرکاری عہدیدار نہیں چاہتے کہ اِس علاقہ میں ترقی کو یقینی بنایا جاسکے۔ پرانے شہر سے سرکاری دفاتر کی منتقلی کے مسئلہ پر متعدد مرتبہ توجہ دہانی کے باوجود عہدیداروں کی جانب سے اختیار کردہ رویہ سے ایسا محسوس ہوتا ہے کہ خود عہدیدار پرانے شہر میں خدمات کی انجام دہی کے لئے سنجیدہ نہیں ہیں۔ شہر کے اِس خطہ کو ترقی یافتہ بنانے اور اِس علاقہ کی حالت کو بہتر بنانے کے لئے یہ ضروری ہے کہ اِن علاقوں میں سرکاری عہدیداروں کی آمد و رفت کو یقینی بنایا جائے۔ چونکہ جب سرکاری عہدیدار اِن علاقوں میں وقت گزاریں گے تو اُنھیں اِس علاقہ میں فراہم کی جانے والی بنیادی سہولتوں کے متعلق احساس ہونے لگے گا کہ علاقہ کے عوام کن حالات میں زندگی گزار رہے ہیں۔ پرانے شہر میں بنیادی سہولتوں بالخصوص برقی سربراہی میں خلل کے علاوہ سڑکوں و گلی کوچوں کی عدم صفائی عام شکایت ہوکر رہ گئی ہے۔ اس کے باوجود بھی عہدیدار اس مسئلہ کے حل پر توجہ مبذول نہیں کررہے ہیں جوکہ شہر کے اِس اہم حصہ کو نظرانداز کرنے کے مترادف ہے۔ عوام چاہتے ہیں کہ اِس علاقہ کی ترقی کو یقینی بنانے کے لئے اعلیٰ عہدیداروں کے دفاتر یا کم از کم ہفتہ میں دو یا تین دن پرانے شہر میں گزارنے کا اُنھیں پابند بنایا جائے تاکہ وہ اِس علاقہ کے عوام کی مشکلات سے واقف ہوسکیں۔ سابق میں کمشنر آف پولیس نے اِس بات کا اعلان کیا تھا کہ وہ پرانے شہر کے سابق کمشنر آفس موجودہ ڈی سی پی ساؤتھ زون دفتر پر عوام سے ملاقات کا پروگرام رکھیں گے اِسی طرح بلدی عہدیداروں کی جانب سے بھی اعلان کئے گئے تھے کہ وہ ہفتہ میں کم از کم دو دن پرانے شہر پر خصوصی توجہ دیتے ہوئے صاف صفائی کے انتظامات کو یقینی بنائیں گے لیکن یہ اعلانات سیاسی اعلانات کی طرح ثابت ہوئے اور عملی طور پر کوئی فائدہ پرانے شہر کے عوام کو حاصل نہیں ہوا۔ پرانے شہر کے عوام کا یہ احساس ہے کہ منتخبہ عوامی نمائندے اور عہدیدار عوام کی بنیادی ضرورتوں کی تکمیل پر توجہ دینے کے لئے اُن کے درمیان جب تک حقائق سے آگہی حاصل نہیں کرتے اُس وقت تک تمام مسائل کا حل ممکن نہیں ہے چونکہ کاغذی نمائندگیوں یا مسائل سے واقفیت کے ذریعہ اُن کی یکسوئی دشوار نظر آرہی ہے۔ پرانے شہر کے کئی علاقوں میں کچرے کی عدم نکاسی سب سے بڑا مسئلہ بنا ہوا ہے جسے بلدی عہدیدار بالخصوص کمشنر مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد اگر سنجیدگی سے کوشش کریں تو فوری طور پر حل کرسکتے ہیں۔ اِسی طرح محکمہ برقی کے اعلیٰ عہدیدار اگر پرانے شہر میں عوامی شکایات کی سماعت کے لئے خصوصی اجلاس منعقد کریں تو ممکن ہے کہ پرانے شہر کے عوام کو درپیش برقی سربراہی میں خلل کے مسائل سے نجات حاصل ہو چونکہ کئی علاقوں میں برقی ٹرانسفارمرس پر ضرورت سے زیادہ بوجھ عائد کیا جانا ایک اہم مسئلہ ہے جس کا حل صرف اعلیٰ عہدیدار کی موجودگی میں ہی ممکن ہوسکتا ہے۔ اِسی لئے محکمہ برقی کے اعلیٰ عہدیدار اگر اسمبلی حلقہ کی اساس پر اجلاس منعقد کرتے ہوئے مسائل حل کرنے کا اعلان کرتے ہیں تو پرانے شہر میں بلاوقفہ برقی سربراہی کو یقینی بنایا جاسکے گا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT