Tuesday , August 22 2017
Home / شہر کی خبریں / پرانے شہر میں مچھر کش ادویات کا عدم چھڑکاؤ

پرانے شہر میں مچھر کش ادویات کا عدم چھڑکاؤ

مچھروں کے غیر معمولی اضافہ سے ملیریا اور دیگر امراض کا پھیلاؤ
حیدرآباد۔ 18 اگسٹ ( سیاست نیوز ) شہر میں جاری وبائی امراض کی بنیادی وجہ مچھر ہیں لیکن مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کی جانب سے پرانے شہر کے علاقوںمیں مچھر کش ادویات کے چھڑکاؤ میں عدم دلچسپی شہر کے کئی علاقوں میں مچھروں کی بڑھتی تعداد میں اضافہ کا سبب بن رہی ہے۔شہریوں کی جانب سے گھروں میں مچھروں کو داخل ہونے سے روکنے کیلئے اپنے طور پر اقدامات تو کئے جاتے ہیں لیکن پرانے شہر کے کئی علاقوں کی حالت ٹولی چوکی سے ابتر ہوتی جا رہی ہے لیکن اس مسئلہ پر کوئی توجہ نہیں دی جا رہی ہے۔ شہر کے بلدی مسائل کے حل کیلئے بلدی عہدیداروں کو متحرک رہنے کی ریاستی وزیر بلدی نظم و نسق ہدایت تو دے رہے ہیں لیکن ان عہدیداروں کو پرانے شہر کے علاقوں کے متعلق واضح ہدایات جاری کرنے کی ضرورت ہے کیونکہ پرانے شہر کے علاقوں بہادر پورہ‘ کشن باغ ‘ کالا پتھر‘ بندلہ گوڑہ‘ تاڑبن‘ شاہ علی بنڈہ‘ حویلی منجھلی بیگم‘ مغلپورہ‘ تالاب کٹہ‘ سلطان شاہی‘ عیدی بازار ‘ معین پورہ‘ ملک پیٹ‘ چنچل گوڑہ ‘ اعظم پورہ‘ عثمان باغ ‘ چادرگھاٹ ‘ املی بن‘ منڈی میر عالم‘ فتح دروازہ اور دیگر علاقوں میں مچھر کش ادویات کے عدم چھڑکاؤ کے سبب کافی مچھر ہو چکے ہیں اور ان مچھروں کی آماجگاہ رہائشی علاقوں میں موجود کچہرے کے ڈھیر ہیں۔منتخبہ اراکین بلدیہ اور عہدیدار اگر فوری طور پر اس مسئلہ پر توجہ مرکوز کرتے ہوئے ان علاقوں میں مچھر کش ادویات کے چھڑکاؤ کو یقینی بنائیں تو مچھروں کی افزائش میں کمی واقع ہونے کی امید ہے جس کے ذریعہ  وبائی امراض پر قابو پایا جا سکتا ہے۔پرانے شہر کے کئی علاقوں میں مکینوں کا کہنا ہے کہ وہ عرصۂ دراز سے مچھر کش ادویات کے چھڑکاؤ کے منتظر ہیں بلکہ بعض علاقوں میں شہریوں کا کہنا ہے کہ وہ تو اس غلط فہمی میں ہیں کہ شائد مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کی جانب سے اس شعبہ کو ہی بند کر دیا گیا ہے۔ پرانے شہر کے علاقوں میں مچھر کش ادویات کا چھڑکاؤ ہوئے کئی ماہ ہو چکے ہیں اور کئی علاقوں میں برسوں سے مچھر کش ادویات کا چھڑکاؤ نہیں ہو پایا ہے۔ بلدی عہدیداروں نے اس بات کی توثیق کی کہ شہر میںکئی علاقہ ایسے ہیں جہاں سے شکایت کی عدم وصولی کی بنیاد پر مچھرکش ادویات کا چھڑکاؤ نہیں ہوتا۔ بتایا جاتا ہے کہ حالیہ عرصہ میں نئے شہر کے بیشتر بلدی حلقۂ جات سے تعلق رکھنے والے کارپوریٹرس نے اپنے علاقوں میں مچھر کش ادویات کے چھڑکاؤ کے لئے دباؤ ڈالنا شروع کردیا ہے جس کے سبب مشینوں کی قلت محسوس کی جارہی ہے۔اسی طرح اگر پرانے شہر کے کارپوریٹرس کی جانب سے اپنے علاقوں میں مچھر کش ادویات کے چھڑکاؤ کو یقینی بناتے ہوئے پرانے شہر کے علاقوں کو مچھروں سے پاک بنایا جاتا ہے تو شہر کے اس خطہ میں بھی صفائی کے ممکنہ اقدامات اور صحتمند ماحول کی فراہمی یقینی بنائی جا سکتی ہے۔عوام نے بلدی عہدیداروں سے اپیل کی کہ وہ نمائندگی یا شکایات کا انتظار کرنے کے بجائے اپنی ذمہ داری محسوس کرتے ہوئے مچھر کش ادویات کے چھڑکاؤ کو یقینی بنائیں۔

TOPPOPULARRECENT