Saturday , August 19 2017
Home / شہر کی خبریں / !پرانے نوٹ کی گنتی پر شبہ

!پرانے نوٹ کی گنتی پر شبہ

حیدرآباد۔8۔ڈسمبر(سیاست نیوز) بینک میں جمع کردہ آپ کی پرانی کرنسی نوٹ محفوظ ہے؟ اس کی گنتی کے متعلق آپ مطمئن ہیں؟ آپ نے جو رقم جمع کروائی ہے اس کے متعلق خود ماہرین بینک کاری نظام شبہات میں مبتلاء ہوتے جا رہے ہیں۔حکومت کی جانب سے بڑے کرنسی نوٹوں کی تنسیخ کے فیصلہ کے بعد بینکو ںمیں کتنی دولت جمع کی گئی اور کتنے بڑے کرنسی نوٹ بازار وں میں موجود تھے؟ 8نومبر کو ایک تقریر کے ذریعہ وزیر اعظم نے ملک کی 86فیصد کرنسی کو کاغذ کے ٹکڑوں میں تبدیل کرنے کا اعلان کرتے ہوئے یہ کہا تھا کہ اس کے ذریعہ ملک میں موجود غیر محسوب کرنسی باہر آئے گی۔ 8نومبر کے بعدسے ایک ماہ کے دوران جو رقومات بینکوں تک پہنچی ہیں ان کے متعلق کہا جا رہا ہے کہ کھاتوں میں جمع ہونے والی دولت 11.5لاکھ کروڑ تک پہنچ چکی ہے جو کہ 1000اور 500کے نوٹوں کی جملہ مالیت 15.5لاکھ کروڑ کا 75فیصد ہے۔ ایک ماہ میں جمع کی جانے والی یہ دولت کے اعداد و شمار نے ایک مرتبہ پھر شبہات پیدا کردیئے ہیں کہ کہیں ملک بھر کے کھاتوں میں جمع کی جانے والی کرنسی کی گنتی میں کوئی غلطی تو نہیں ہوئی ہے؟ کیونکہ ریزرو بینک آف انڈیا نے بینک کھاتو ںمیں جمع ہونے والی رقومات کے متعلق جو تفصیلات جاری کی ہیں ان کے مطابق ایک ماہ کے دوران بینک کھاتو ںمیں جملہ 11.55لاکھ کروڑ روپئے جمع کئے جا چکے ہیں لیکن آر بی آئی کے ان اعداد و شمار پر اسٹیٹ بینک آف انڈیا کو شبہات پیدا ہو چکے ہیں اور اسٹیٹ بینک آف انڈیا کے اکنامک ریسرچ ڈپارٹمنٹ نے اپنی ایک رپورٹ میں اس خدشہ کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ کھاتوں میں جمع ہونے والی دولت کی گنتی میں کوئی غلطی ہوئی ہے جس کے سبب یہ اعداد و شمار سامنے آرہے ہیں۔ اسٹیٹ بینک آف انڈیا کے ماہرین کا کہنا ہے کہ جو رقومات جمع کی گئی ہیں ان کو دوگنا پیش کیا جا رہا ہے اس بات کا خدشہ ہے کیونکہ کئی بینکوں کے پاس اتنی رقومات وصول نہیں ہوئی ہیں جتنی ریزرو بینک آف انڈیا کی جانب سے دکھائی جا رہی ہیں۔ ریزرو بینک آف انڈیا کی جانب سے جاری کئے جانے والے اعداد و شمار کے مطابق جمع کی جانے والی کرنسی کے انٹر بینکنگ اعداد‘ پوسٹ آفس اور شیڈول کمرشیل بینک نے کتنے جمع کئے ہیں اس کا واضح ریکارڈ موجود نہیں ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ اسٹیٹ بینک آف انڈیا کے معاشی ماہرین نے بتایا کہ 10تا15فیصد بینکو ںمیں اعداد و شمار کو دوگنا کرنے کی غلطی کا امکان ہے جس کے سبب 11.5لاکھ کروڑ بینک کھاتو ںمیں جمع ہونے کے اعداد و شمار سامنے آرہے ہیں ۔ حکومت کی جانب سے کرنسی کی تنسیخ کے اعلان کے بعد یہ کہا جار ہا تھا کہ غیر محسوب کرنسی بینک کھاتوں میں نہیں پہنچ پائے گی لیکن اندرون ایک ماہ 11.5لاکھ کروڑ بینک میں پہنچ جانے کے بعد اب صرف 3.5لاکھ کروڑ بینکوں تک پہنچنا باقی ہے جبکہ جمع کروانے کی مدت ابھی 20دن ہے اس دوران یہ رقومات بھی بینک کھاتو ںمیں پہنچ سکتی ہیں لیکن اسٹیٹ بینک کے ماہرین کے خدشات نے نئی بحث چھیڑ دی ہے کہ کہیں بینک کھاتوں میں جمع کردہ رقومات غیر محفوظ تو نہیں ہیں؟

TOPPOPULARRECENT