Tuesday , May 23 2017
Home / دنیا / پریت بھرارا سمیت 46 اٹارنیز مستعفی ہوجائیں

پریت بھرارا سمیت 46 اٹارنیز مستعفی ہوجائیں

امریکی محکمہ انصاف کی ہدایت ۔ نظم و نسق کی مکمل تبدیلی کی سمت پیشرفت
واشنگٹن 11 مارچ ( سیاست ڈاٹ کام ) ٹرمپ انتظامیہ نے امریکہ میں جملہ 46 اٹارنیوں کو مستعفی ہوجانے کی ہدایت دی ہے جن میں ہندوستانی امریکی اٹارنی پریت بھرارا بھی شامل ہیں ۔ ان تمام کو سابق امریکی صدر بارک اوباما نے نامزد کیا تھا ۔ ٹرمپ انتظامیہ کا کہنا ہے کہ مکمل تبدیلی کے مقصد سے یہ ہدایت جاری کی گئی ہے ۔ امریکہ میں بحیثیت مجموعی 93 اٹارنیز ہیں۔ ان میں سے کئی نے اپنے عہدوں سے سبکدوشی اختیار کرلی ہے جبکہ 46 اٹارنیز ٹرمپ انتظامیہ کے ابتدائی ہفتوں میں برقرار رہے تھے جنہیں امریکہ کے اٹارنی جنرل جیف سشنس نے ہدایت دی ہے کہ وہ مکمل نظم و نسق تبدیلی کیلئے مستعفی ہوجائیں۔ محکمہ انصاف کی ترجمان سارا اسگور نے یہ بات بتائی ۔ ایک بیان میں اس ہدایت کی مدافعت کی گئی ہے اور کہا گیا ہے کہ سابق میں جارج ڈبلیو بش اور بل کلنٹن کے انتظامیہ میں بھی اپنی معیاد کے ابتدائی ایام میں اسی طرح کی درخواستیں کی گئی تھیں۔ جن اٹارنیز کو مستعفی ہونے کیلئے کہا گیا ہے ان میں پریت بھرارا بھی شامل ہیں جو جنوبی ضلع نیویارک کیلئے امریکی اٹارنی تھے ۔ انہیں 2009 میں اوباما نے مقرر کیا تھا ۔ مسٹر بھرارا کو ایک بہترین پراسکیوٹر قرار دیا جانے لگا تھا اور انہوں نے ماہ نومبر میں ان کی انتخابی کامیابی کے بعد صدر ٹرمپ سے ملاقات بھی کی تھی ۔ اس ملاقات کے بعد کہا جا رہا تھا کہ صدر ٹرمپ نے بھرارا سے برقرار رہنے کو کہا ہے ۔ وائیٹ ہاوز یا پھر محکمہ انصاف نے مسٹر بھرارا سے متعلق سوالات پر کسی رد عمل کا اظہار نہیں کیا ہے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT