Sunday , August 20 2017
Home / شہر کی خبریں / پستی سے بلندی کی طرف پرواز کیلئے ڈاکٹر عبدالکلام کی زندگی مشعل راہ

پستی سے بلندی کی طرف پرواز کیلئے ڈاکٹر عبدالکلام کی زندگی مشعل راہ

طلباء و طالبات کے تابناک مستقبل کیلئے ادارہ سیاست کی خدمات جاری، سدی پیٹ میں جلسہ، جناب عامر علی خاں ، فاروق حسین اور سید ارشاد کا خطاب
حیدرآباد ۔ 18 ۔ اگست (سیاست نیوز) کسی بھی شعبہ میں ترقی کے لئے وقت کی پابندی ، ڈسپلین اور سخت محنت ضروری ہے۔ اس کے بغیر ترقی کے زینے طئے کرنا ناممکن  ہے ۔ طلباء و طالبات تعلیم کے ساتھ ساتھ سائنسی ایجادات کی طرف بھی خصوصی توجہ کریں۔ اس طرح کی توجہ عوامی صدر جناب اے پی جے عبدالکلام مرحوم کرتے تھے ۔ ان خیالات کااظہار کل یہاں گرلز جونیئر کالج آڈیٹوریم سدی پیٹ میں سابق صدر جمہوریہ کی خدمات پر منعقدہ جلسہ تعزیتی سے جناب عامر علی خاں نیوز ایڈیٹر سیاست بحیثیت مہمان خصوصی نے کیا جس کا اہتمام انجمن محبان اردو نے کہا تھا جس کی صدارت محمد عبدالرزاق نے کی ۔ جناب عامر علی خاں نے کہا کہ سخت محنت ہی کامیابی کی کلید ہے ۔ انہوں نے اس سلسلے میں سابق صدر کی مثال پیش کرتے ہوئے کہا کہ پستی سے بلندی کی سمت پرواز کرنے کے دوران جناب عبدالکلام مرحوم نے کئی مسائل کو پیچھے ڈالتے ہوئے صرف اور صرف آگے بڑ ھنے کی ہی کوشش کی اور رفتہ رفتہ اعلیٰ مقام پر پہنچے۔ انہوں نے طلباء و طالبات سے کہا کہ اپنی تعلیم کے ساتھ ساتھ فنی تعلیم کو بھی ترجیح دیں اور فنی صلاحیتوں کو ابھارئے ۔ جناب عامر علی خاں نے طلباء کی مختصر صلاحیتوں کو ابھارنے کیلئے ادارہ سیاست کی جانب سے ممکنہ تعاون کا بھی پیشکش کیا اور کہا کہ ادارہ سیاست نے نہ صرف طلباء بلکہ خواتین و طالبات کے مستقبل کو سنوارنے کیلئے کئی طرح کے عملی اقدامات کر رہے ہیں۔ پاٹ پینٹنگ اور دیگر کورسس کی تربیت کا اہتمام کیا۔ تربیت حاصل کرنے کے بعد کئی طالبات و خواتین خود اپنے طور پر روزگار کما رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ادارہ سیاست نے ایک ذہین مسلم طالبہ سلویٰ فاطمہ کو پائیلٹ کی ٹریننگ میں تعاون کیا ۔ اس کے علاوہ آئی اے ایس کوچنگ کلاسس کا بھی آغاز کیا۔ یونانی طب کے میدان میں فروع کیلئے ادارہ سیاست نے نمایاں کردار ادا کیا۔ نیوز ایڈیٹر نے کہا کہ طلباء اپنی زندگی کے معیار کو بلند کرنے کیلئے مرحوم صدر جناب عبدالکلام کی زندگی سے سبق حاصل کریں۔ قرآن مجید کی تلاوت کے ساتھ ترجمہ بھی پڑھیں تاکہ زندگیوں میں ایک انقلاب آسکے ۔ جناب عامر علی خاں نے بابائے میزائیل عبدالکلام کو خراج عقیدت پیش  کرتے ہوئے کہا کہ مرحوم صدر کی ملک کے لئے خدمات بے مثال ہیں۔ مرحوم نے اپنی کتابوں خطبات کے ذریعہ قوم کے نو نہالوں کو ایسا درس دیا جو ان کیلئے مشعل راہ بن سکتا ہے ۔ انہوں نے ملک کی ترقی کیلئے اپنی زندگی وقف کی۔ موصوف نیوز ایڈیٹر نے عزم کا اظہار کیا کہ وہ خواتین کیلئے اورنٹیڈ کورس کے علاوہ دیگر فنی کورس کے لئے تمام سدی پیٹ میں مراکز قائم کرتے ہوئے تمام سہولیات فراہم کریں گے تاکہ خواتین کا مستقبل تابناک ہو اور سدی پیٹ میں ویمنس ڈگری کالج کے قیام کیلئے حکومت سے موثر نمائندگی کریںگے۔ انہوں نے توقع ظاہر کی کہ اس طرح کے عملی اقدامات کے بعد خواتین خودروزگار سے وابستہ ہوتے ہوئے اپنی معیشت کو مستحکم کرپائیں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ آج کے دور میں فنون لطیفہ کی تعلیم کی اشد ضرورت ہے ۔ اس کو پیش نظر رکھتے ہوئے انہوں نے اورینٹیشن اور فنی تعلیم کے مراکز کے قیام کی تجویز تیار کی ہے ۔ انہوں نے طالبات و خواتین کو مشورہ دیا کہ وہ ان کورسس پر خاص توجہ کے ساتھ سیکھے جو کہ ان کے تابناک اور روشن مستقبل میں اہم ثابت ہوگا۔ جناب فاروق حسین ایم ایل سی نے طالبات کو مشورہ دیا کہ وہ تعلیم حاصل کرنے میں پیچھے نہ رہیں۔ انہوں نے کہا کہ طلباء و طالبات اپنی ضروریات کے تعلق سے اپنے صدر معلمہ اور پرنسپل کو توجہ دلائیں اور صدر معلمہ اس سلسلے میں مجھ سے ربط پیدا کریں تاکہ طالبات کی شکایت کا ازالہ ہوسکے ۔ انہوں نے طالبات سے کہا کہ غریبی کو اپنی تعلیم جاری رکھنے میں رکاوٹ محسوس نہ کریں ۔ ایم ایل سی نے انکشاف کیا کہ تلنگانہ ریاست میں اردو کانفرنس کے انعقاد کے سلسلے میں وہ وزیر اعلیٰ سے نمائندگی کرچکے ہیں اور چیف منسٹر نے دو کروڑ روپئے جاری کرنے کا وعدہ کیا ہے ۔ انہوں نے طالبات سے کہا کہ وہ عوامی صدر مرحوم کی زندگی کو اپنے اپنے لئے مشعل راہ بنالیں ۔ انہوں نے بانی سیاست جناب عابد علی خاں صاحب مرحوم کی خدمات کو بھی خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ ان کی جدوجہد سے سدی پیٹ میں اقبال مینار تعمیر ہوا جس کا افتتاح خود انہوں نے کیا تھا ۔ جناب سید مسکین احمد نے قومی صدر کی خدمات کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے طالبات کو مشورہ دیا کہ مرحوم صدر کو اپنا آئیڈیل بنائے اور سخت محنت سے تعلیم حاصل کر کے ملک و قوم کا نام روش کریں۔ انہوں نے مختلف میدانوں میں ادارہ سیاست کی عملی و فنی خدمات کو ناقابل فراموش قرار دیا  اور کہا کہ طالبات کی صلاحیتوں کو ابھارنے کیلئے تحریری تقریری مقابلوں کا اہتمام کیا جاتا ہے۔11 نومبر کو بھی مولانا ابوالکلام آزاد کی یوم پیدائش کے موقع پر اس طرح کے مقابلوں کا اہتمام کیا جائے گا۔ طالبات کی مکمل حوصلہ افزائی کی جائے گی۔مینجنگ ڈائرکٹر میدک انجنیئرنگ کالج مسٹر سید ارشاد احمد نے کہا کہ عبدالکلام کی زندگی کھلی کتاب ہے۔ انہوں نے سادگی کو ا پنایا اور قوم کی خدمات پر خصوصی توجہ دی۔ طلبہ اور طالبات کی تمام شعبوں میں حوصلہ افزائی کرتے ہوئے انہیں اپنے اندر موجود ڈر و خوف دور کرنے اور چیالنجس سے نہ گھبرانے کا درس دیا۔ جناب ناگامنی کمار پرنسپل نے سابق صدر کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ جناب عبدالکلام مرحوم نے انسانیت دوستی کے لئے انمٹ نقوش چھوڑے ہیں اور کہا کہ اس سے بڑی مثال کیا ہوسکتی ہے کہ انہوں نے اپنے ڈرائیور جو کہ کم تعلیم یافتہ تھا اسے اعلیٰ تعلیم دلواکر میناریٹی کی ڈگری کالج میں لکچرر کی حیثیت سے تقرر کروایا ۔ انہوں نے کالج ہذا کے مختلف مسائل کا تذکرہ کیا ۔ کالج میں کئی مخلوعہ جائیدادیں ہیں۔ کنٹراکٹ لکچرارس کو تنخواہیں ادا کرنے کا محکمہ تعلیمات کو متوجہ کیا ۔ انہوں نے کہا کہ سہولتوں کے عدم فراہمی کے سبب کالج میں طالبات کی تعداد گھٹ رہی ہے ۔ جلسہ کا آغاز قرات کلام پاک سے ہوا۔ بعد ازاں تقریری مقابلے کے کامیاب طلبات کو مہمانان خصوصی کے ہاتھوں نقد انعامات کی تقسیم عمل میں آئی ۔ اس جلسہ کو سید ارشاد احمد سکرے ٹری میدک کالج ، محمد غوث محی الدین ، شہید خاں عبدالصبور ، محمد عبدالرزاق نے بھی مخاطب کیا ۔ جلس کی کارروائی محمد فصیح ال دین لکچرر نے چلائی۔ جلسہ میں اردو، تلگو طالبات کے علاوہ اساتذہ کی کثیر تعداد شریک تھی جو کہ بڑے انہماک سے جناب عامر علی خاں کی تقریر کو سماعت کر رہے تھے ۔ ابتداء میں جناب عامر علی خاں نیوز ایڈیٹر نے میدک انجنیئرنگ کالج کونڈہ پاک کا دورہ کیا جہاں جناب سید ارشاد احمد نے گلپوشی و شال پوشی کی ۔ اس موقع پر طالبات نے بھی سابق صدر کو خراج عقیدت پیش کیا ۔

TOPPOPULARRECENT