Sunday , May 28 2017
Home / Top Stories / پناما اسکینڈل : نواز شریف کو عارضی طور پر راحت

پناما اسکینڈل : نواز شریف کو عارضی طور پر راحت

وزارت عظمیٰ کے عہدہ سے ہٹانے کیلئے خاطر خواہ ثبوت موجود نہیں ،مشترکہ تحقیقاتی ٹیم تشکیل دینے سپریم کورٹ کا حکم

اسلام آباد ۔ /20 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم پاکستان نواز شریف کو آج اس وقت عارضی راحت ملی جب سپریم کورٹ نے کہا کہ انہیں عہدہ سے ہٹانے کیلئے خاطر خواہ ثبوت نہیں پائے جاتے ۔ تاہم عدالت نے نواز شریف اور ان کے ارکان خاندان کے خلاف رشوت کے الزامات کی تحقیقات کیلئے مشترکہ ٹیم تشکیل دینے کا حکم دیا ۔ یہ مقدمہ 1990 ء کے دہے میں لندن میں اثاثہ جات کی خریدی کیلئے رقمی خردبرد سے متعلق ہے جب نواز شریف دو مرتبہ وزیراعظم تھے ۔ ان اثاثوں کا گزشتہ سال پناما پیپرس نے افشاء کیا تھا ۔ اس میں یہ بھی بتایا گیا کہ بیرون ملک نواز شریف کے بچوں کی ملکیت میں شامل کمپنیاں ان اثاثہ جات کا انتظام و انصرام کررہی ہیں ۔ 5 ججس پر مشتمل سپریم کورٹ کی بنچ نے 540 صفحات پر مشتمل تاریخی متفرق فیصلہ سنایا جس میں مشترکہ تحقیقاتی ٹیم تشکیل دینے کی ہدایت دی گئی جو مختلف ایجنسیوں جیسے طاقتور ، جاسوسی ایجنسیوں آئی ایس آئی اور فوجی انٹلیجنس کے نمائندوں پر مشتمل ہو ۔ اس فیصلے میں کہا گیا ہے کہ وزیراعظم نواز شریف کو برطرف کرنے کیلئے خاطر خواہ ثبوت نہیں پائے جاتے ۔ جسٹس کھوسا نے عدالتی فیصلہ سناتے ہوئے کہا کہ اس معاملہ کی جامع تحقیقات ضروری ہے ۔ مشترکہ تحقیقاتی ٹیم اندرون ایک ہفتہ قائم کی جائے گی اور وہ ہر دو ہفتے بعد بنچ کو اپنی رپورٹ پیش کرے گی ۔ یہ ٹیم اندرون 60 یوم تحقیقات مکمل کرلے گی ۔ یہ مقدمہ پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ  عمران خان ، جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق اور شیخ رشید احمد نے دائر کرتے ہوئے وزیراعظم نواز شریف کو نااہل قرار دینے کی خواہش کی تھی ۔ درخواست گذاروں نے دعویٰ کیا کہ وزیراعظم نے /5 اپریل 2016 ء کو قوم سے خطاب اور /16 مئی  2016 ء کو قومی اسمبلی میں تقریر کرتے ہوئے جھوٹ بیانی سے کام لیا ۔ نواز شریف اور ان کی پی ایم ایل ۔ این پارٹی نے آج راحت کی سانس لی ۔ کیونکہ وزیراعظم کو برطرف کرنے کا کوئی فیصلہ نہیں سنایا گیا جس کا اندیشہ ظاہر کیا جارہا تھا ۔ سپریم کورٹ کے آج کے فیصلے کے بعد پارٹی کارکنوں نے جشن منایا ۔ ان کے حامیوں نے اس فیصلے کو انصاف کی فتح قرار دیا ۔ وزیر دفاع خواجہ آصف نے جو نواز شریف کے قریبی ساتھی ہیں کہا کہ گزشتہ سال ہم سے پناما افشاء اسکینڈل کی تحقیقات کیلئے کمیشن قائم کرنے کا مطالبہ کیا جارہا تھا لیکن آج ہمارا موقف درست ثابت ہوا ۔ ٹی وی فوٹیج میں نواز شریف کو اپنے چھوٹے بھائی شہباز شریف سے جو صوبہ پنجاب کے چیف منسٹر ہیں ، گلے ملتے دکھایا گیا ۔ مریم نے نواز شریف کی ایک تصویر  کے ساتھ ٹوئٹ کیا کہ ان کے ارکان خاندان اور پی ایم ایل ۔ این قائدین عدالتی فیصلہ پر خوشی منارہے ہیں ۔ نواز شریف ایسے واحد پاکستانی سیاستداں ہیں جنہیں فوجی بغاوت کیلئے معروف اس ملک میں 3 مرتبہ وزارت عظمیٰ کے عہدہ پر فائز رہنے کا اعزاز حاصل ہوا ہے ۔ اپوزیشن قائدین اور وکلاء نے عدالت کے فیصلہ کو نواز شریف کو ماخوذ کرنے کے مترادف قرار دیتے ہوئے ان سے استعفیٰ کا مطالبہ کیا ۔ عمران خان نے کہا کہ نواز شریف اقتدار کے اخلاقی حق سے محروم ہوگئے ہیں  ۔ انہیں فوری مستعفی ہوجانا چاہئیے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT