Friday , September 22 2017
Home / شہر کی خبریں / پولیس انسپکٹر20کروڑ کے اثاثہ جات کا مالک

پولیس انسپکٹر20کروڑ کے اثاثہ جات کا مالک

وشاکھاپٹنم ساحلی سکیورٹی پولیس میں تعینات شیخ حسین کے کئی مکانات پر دھاوے
حیدرآباد۔/17فبروری، ( سیاست نیوز)انسداد رشوت ستانی بیورو کے عہدیداروں نے آج بتایا کہ ایک پولیس انسپکٹر کے پاس غیر محسوب اثاثہ جات پائے جاتے ہیں۔ اس کے اثاثہ جات کی لاگت 20کروڑ بتائی گئی ہے۔ یہ اثاثہ جات اس کی معلوم آمدنی سے بڑھ کر ہیں۔ اے سی بی عہدیداروں نے پولیس انسپکٹر شیخ حسین کے خلاف غیر محسوبہ اثاثہ جات رکھنے کی پاداش میں کیس درج رجسٹر کیا ہے۔ انسداد رشوت ستانی عہدیداروں نے کئی شہروں میں دھاوے کرنے کے بعد اس سے مربوط تمام اثاثہ جات کو ضبط کرلیا ہے۔ شیخ حسین کو اس وقت ضلع وشاکھاپٹنم میں ساحلی سیکورٹی پولیس سرکل انسپکٹر کی حیثیت سے تعینات کیا گیا ہے۔ انسداد رشوت ستانی بیورو کے عہدیداروں نے مزید بتایا کہ انہوں نے انسپکٹر کی ملکیت والی جائیدادوں اور دیگر املاک کے دستاویزات کو ضبط کرلیا ہے جن کی موجودہ مارکٹ قدر 20کروڑ بتائی گئی ہے۔ وشاکھاپٹنم، بنگلور، وجیا نگرم، سریکا کولم اور دیگر چند شہروں میں 16مختلف مقامات پر بیک وقت دھاوے کئے گئے۔ یہ تمام مقامات اس انسپکٹر کی ملکیت میں ہیں۔اخباری نمائندوں سے بات کرتے ہوئے وشاکھاپٹنم اربن کے ڈی ایس پی راما کرشنا پرساد نے کہا کہ شیخ حسین اور ان کے رشتہ داروں کی رہائش گاہوں سے دستاویزات کو ضبط کرلیا گیا ہے۔ اس پولیس عہدیدار کا وشاکھاپٹنم کے مضافات میں ایک عالیشان بنگلہ بھی ہے۔ اس کے علاوہ وشاکھاپٹنم میں کئی مکانات اس کی ملکیت میں ہیں۔ اس نے 12سال قبل پولیس ملازمت اختیار کی تھی اور پولیس کمشنریٹ کے تحت مختلف عہدوں پر ڈیوٹی انجام دی اور اسے اب وشاکھاپٹنم میں ساحلی سیکورٹی پولیس کا سرکل انسپکٹر بنایا گیا ہے۔ اس نے شہر کے پولیس کنٹرول روم میں بھی انسپکٹر کی حیثیت سے خدمات انجام دی تھی۔ اس کے خلاف کل بھی مختلف مقامات پر دھاوے کئے جائیں گے۔

TOPPOPULARRECENT