Monday , September 25 2017
Home / شہر کی خبریں / پولیس عہدیداروں کے ذریعہ شادی مبارک اسکیم کے درخواستوں کی جانچ

پولیس عہدیداروں کے ذریعہ شادی مبارک اسکیم کے درخواستوں کی جانچ

اسکالر شپس اور دیگر اسکیمات میں بھی دھاندلیاں، ڈائرکٹر جنرل انسداد رشوت ستانی اے کے خان کی تحقیقات

حیدرآباد۔ /7نومبر، ( سیاست نیوز) ڈائرکٹر جنرل اینٹی کرپشن بیورو عبدالقیوم خاں نے اس بات کی توثیق کی کہ اقلیتی بہبود کی بعض اسکیمات میں مبینہ بے قاعدگیوں اور بدعنوانیوں کی جانچ کا آغاز کیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ  شادی مبارک، اسکالر شپ اور بعض دیگر اسکیمات میں دھاندلیوں کے بارے میں حکومت کو شکایات وصول ہوئیں جس پر چیف منسٹر نے انہیں جانچ کی ہدایت دی ہے۔ اس سلسلہ میں عہدیداروں کی ایک ٹیم تشکیل دی گئی جو گزشتہ تین دن سے اقلیتی بہبود کے دفاتر میں اسکیمات پر عمل آوری کا جائزہ لے رہی ہے۔ پولیس عہدیداروں کی ٹیم نے کل رات تک ڈسٹرکٹ میناریٹی ویلفیر آفس حیدرآباد اور اسکیمات کیلئے رقم کی اجرائی سے متعلق سنٹر فار گڈ گورننس کا دورہ کیا۔ انہوں نے اس ادارہ کا بھی معائنہ کیا جہاں بجٹ کی اجرائی کا مکمل سافٹ ویر موجود ہے اور جہاں سے امیدواروں اور طلبہ کو رقومات جاری کی جاتی ہیں۔ باوثوق ذرائع کے مطابق ابتدائی جانچ کے بعد چیف منسٹر کو رپورٹ پیش کی جائے گی۔ عہدیداروں کا کہنا ہے کہ بدعنوانیوں میں درمیانی افراد کے علاوہ محکمہ کے بعض متعلقہ ملازمین اور عہدیدار بھی ملوث ہونے کا شبہ پایا جاتا ہے اس کی بھی مکمل جانچ کی جائے گی۔ ذرائع نے بتایا کہ شادی مبارک اسکیم کے سلسلہ میں خود چیف منسٹر کو کئی عوامی نمائندوں کی جانب سے شکایت کی گئی کہ حکومت کے بجٹ کا بیجا استعمال کیا جارہا ہے۔ اینٹی کرپشن بیورو کے عہدیداروں نے ابتدائی تحقیقات میں پتہ چلایا کہ شادی مبارک کی امدادی رقم ایک ہی اکاؤنٹ میں ایک سے زائد مرتبہ جاری کی گئی۔ اگرچہ اسے ملازمین کی غلطی سے تعبیر کیا جارہا ہے لیکن تحقیقاتی عہدیداروں نے اس معاملہ کا تفصیل سے نوٹ لیا اور تمام تفصیلات اکٹھا کرنے کی ہدایت دی۔ بتایا جاتاہے کہ جن بینک اکاؤنٹس میں زائد رقم جمع کردی گئی ان سے یہ رقم حاصل کی جائے گی اور ضرورت پڑنے پر پولیس کارروائی بھی کی جاسکتی ہے۔ پولیس عہدیداروں کے ذریعہ شادی مبارک اسکیم کی زیر التواء درخواستوں اور منظورہ درخواستوں کی جانچ کا بھی فیصلہ کیا گیا ہے۔ عہدیدار چند ایک درخواستوں کو حاصل کرتے ہوئے ان کے بارے میں معلومات حاصل کریں گے۔ شادی مبارک اسکیم کے سلسلہ میں حیدرآباد اور رنگاریڈی میں درمیانی افراد کے رول اور عہدیداروں کے ملوث ہونے کی شکایات ملی ہیں۔ اینٹی کرپشن بیورو کے عہدیداروں کی جانب سے مسلسل دو مرتبہ دفتری اوقات کے بعد بھی اقلیتی بہبود کی فائیلوں کی جانچ اور متعلقہ افراد سے پوچھ تاچھ سے عہدیداروں اور ملازمین میں ہلچل پائی جاتی ہے تاہم حکومت کے سخت موقف سے اندازہ ہوتا ہے کہ خاطیوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔

TOPPOPULARRECENT