Monday , August 21 2017
Home / جرائم و حادثات / پولیس نے حسین ساگر میں جاریہ سال 124 افراد کو خودکشی سے بچالیا

پولیس نے حسین ساگر میں جاریہ سال 124 افراد کو خودکشی سے بچالیا

حیدرآباد۔ 8 ستمبر (سیاست نیوز) لیک پولیس نے جاریہ سال رواں مہینہ ستمبر تک 124 افراد کو خودکشی کرنے سے بچالیا۔ مختلف وجوہات کے سبب حسین ساگر جھیل میں چھلانگ لگاکر خودکشی کرنے والے افراد کی کوششوں کو ناکام بناتے ہوئے لیک پولیس عملہ نے نمایاں کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے۔ خواتین، نوجوان، ضعیف افراد کے علاوہ ذہنی معذوروں کو اس انتہائی اقدام کرنے سے روکنے کیلئے لیک پولیس ایک ٹیم کی شکل میں کام کررہی ہے۔ خودکشی کی کوشش کو ناکام بنانے کے بعد متاثر افراد کی کونسلنگ کی جارہی ہے اور ان کے افرادِ خاندان کو اس اقدام سے واقف کراتے ہوئے آئندہ احتیاط برتنے اور چوکس رہنے کی ہدایت بھی دی جاتی ہے۔ لیک پولیس انسپکٹر شریمتی سری دیوی کی قیادت میں پولیس اسٹیشن کا عملہ ہر وقت چوکس و چوکنا رہتا ہے اور حسین ساگر جھیل میں چھلانگ لگانے والے افراد یا مشتبہ حرکتوں سے ان کی نشاندہی کرتے ہوئے اب تک 124 افراد کی جان بچائی گئی۔ 8 ستمبر کو لیک پولیس عملہ نے ماں اچلی اور اس کے  2 کم عمر بچوں سپنا اور  سشمیتا کو خودکشی کرنے سے بچالیا۔ پولیس عملہ نے اچلی اور اس کے دو بچوں کو پولیس اسٹیشن منتقل کرنے کے بعد خودکشی کے اقدام کے پس پردہ محرکات کا پتہ چلایا جس میں یہ بات سامنے آئی کہ اچلی کا شوہر ایک عادی شرابی ہے اور وہ آئے دن اپنی بیوی اور دیگر افراد خاندان سے جھگڑتا تھا۔ اپنے شوہر کی ہراسانی سے دلبرداشتہ اچلی اور اس کے بچوں نے ٹینک بنڈ میں چھلانگ لگاکر خودکشی کرنے کا فیصلہ کیا۔ اسی طرح کی ایک اور کارروائی میں لیک پولیس نے 28 سالہ ٹی انیل سنگھ جو پیشہ سے اکاؤنٹنٹ ہے ، کو خودکشی کرنے سے بچالیا۔ تحقیقات کے دوران پولیس کو انیل سنگھ نے بتایا کہ سال 2013ء میں اس کی شادی سواپنا نامی لڑکی سے ہوئی تھی اور شادی کے بعد سے دونوں کے درمیان اختلافات پیدا ہونا شروع ہوگئے اور اسے سسرالی رشتہ داروں کی جانب سے بھی مسلسل ہراساں کیا جارہا تھا جس سے دلبرداشتہ ہوکر انیل سنگھ نے انتہائی اقدام کا فیصلہ کیا۔

TOPPOPULARRECENT