Thursday , October 19 2017
Home / Top Stories / پوپ نے مسلم تارک وطن کے پیر دھوئے اور اسے بھائی قرار دیا

پوپ نے مسلم تارک وطن کے پیر دھوئے اور اسے بھائی قرار دیا

کیاسلنوو ڈی پورٹو۔ /24 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) پوپ فرانسیس نے ایک مسلم ، آرتھاڈاکس ، ہندو اور کیتھلک پناہ گزینوں کے پیر دھوئے اور قدم بوسی کی ۔ ان تمام کو ایک خدا کے بیٹے قرار دیا اور کہا کہ وہ سب ان کے بھائی ہیں ۔ پوپ کی یہ کارروائی ایک ایسے وقت منظر عام پر آئی ہے جبکہ مسلم دشمن اور پناہ گزین دشمن لفاظی عروج پر ہے اور بروسلز میں حملوں کے بعد اس میں مزید شدت پیدا ہوگئی ہے ۔ پوپ فرانسیس نے قتل عام کی مذمت کرتے ہوئے اسے ’’جنگ کی نشانی‘‘ قرار دیا اور کہا کہ خون کے پیاسے لوگوں نے یہ حرکت کی ہے ۔ ایسٹر کی ہفتہ وار ماس کے دوران پناہ گزینوں کی پناہ گاہ پر جو گاؤں کے باہر ہے پوپ فرانسیس نے پہونچ کر مختلف عقائد سے وابستہ افراد کے پیر دھوئے اور ان کی قدم بوسی کی ۔ صلیب پر چڑھانے سے پہلے مبینہ طور پر جیسس نے بھی اپنے چیلوں کے پیر دھوئے اور قدم بوسی کی تھی۔  پوپ فرانیسس نے کہا کہ بروسلز پر حملہ آوروں نے تباہی کی کارروائی کی ہے ۔ وہ انسانی اخوت کو تباہ کرنا چاہتے تھے جس کے نمائندہ یہ پناہ گزین ہے جن کا تمدن اور مذہبی عقیدہ ہم سے مختلف ہے لیکن ہم سب بھائی ہیں اور امن کے ساتھ ایک دوسرے کے ساتھ زندگی گزارتے ہیں ۔ کئی پناہ گزین پوپ فرانسیس کی یہ تقریر سن کر رونے لگے ۔ اس رسم میں جو صدیوں سے جاری ہے آج پوپ فرانسیس نے وٹیکن سٹی کی نمائندگی کی ۔

TOPPOPULARRECENT