Thursday , October 19 2017
Home / ہندوستان / پٹرول ، ڈیزل کی قیمت میں اضافہ سے گریز اکسائیز ڈیوٹی میں اضافہ کا آئیل کمپنیوں پر بوجھ

پٹرول ، ڈیزل کی قیمت میں اضافہ سے گریز اکسائیز ڈیوٹی میں اضافہ کا آئیل کمپنیوں پر بوجھ

نئی دہلی ، 7 نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) حکومت نے یہ فیصلہ کیا ہے کہ فی لیٹر پٹرول اور ڈیزل پر اکسائیز ڈیوٹی میں بالترتیب 1.60 روپئے اور 40 پیسے کا اضافہ کیا جائے، اس کے باوجود صارفین کیلئے ایندھن کی قیمت میں اضافہ نہیں کیا جائے گا جبکہ حکومت کے زیرانتظام آئیل کمپنیوں نے موقتی طورپر اضافی بوجھ برداشت کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ حکومت نے اضافی آمدنی کیلئے کل شب پٹرول اور ڈیزل پر اکسائیز ڈیوٹی میں اضافہ کا فیصلہ کیا تاکہ بجٹ نشانہ حاصل کیا جاسکے۔ آئیل کمپنی کے ایک اعلیٰ عہدیدار نے بتایا کہ پٹرول اور ڈیزل کی چلر فروشی میں کوئی تبدیلی نہیں ہوگی اور فی الحال اکسائیز ڈیوٹی کا بوجھ صارفین پر عائد نہیں ہوگا۔ ایندھن پر اکسائیز ڈیوٹی میں اضافہ سے حکومت کو جاریہ مالیاتی سال کے دوران 3,200 کروڑ کی اضافی آمدنی حاصل ہوگی ۔ قبل ازیں حکومت نے مالی سال 2014-15ء میں پٹرولیم شعبہ سے اکسائیز ڈیوٹی کی شکل میں 99.184 کروڑ روپئے وصول کئے تھے جوکہ رواں سال پہلے سہ ماہی میں 33,042کروڑ روپئے رہی ۔ اعلامیہ کے مطابق عام پٹرول پر بنیادی اکسائیز ڈیوٹی میں فی لیٹر 5.46 روپئے سے 7.06 روپئے تک اضافہ کیا گیا ۔ اضافی اور خصوصی اکسائیز ڈیوٹی کو یکجا کرنے پر فی لیٹر پٹرول پر جملہ لیوی 17.48 روپئے سے 19.06 روپئے تک پہنچ گئی ہے۔ عام ڈیزل پر اکسائیز ڈیوٹی میں 4.26 روپئے سے 4.16 روپئے تک اضافہ ہوگیا ہے اور خصوصی اکسائیز ڈیوٹی کی شمولیت کے بعد فی لیٹر ڈیزل پر اکسائیز ڈیوٹی 10.26 سے 10.66 روپئے ہوگئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT