Monday , July 24 2017
Home / شہر کی خبریں / پٹرول ختم، گاڑی ڈھکیلنے والوں کو مفت پٹرول کی فراہمی

پٹرول ختم، گاڑی ڈھکیلنے والوں کو مفت پٹرول کی فراہمی

حیدرآباد میں ایک اسسٹنٹ سب انسپکٹرپولیس کا انوکھاکارنامہ
حیدرآباد 12مارچ (سیاست ڈاٹ کام)سماج اور معاشرہ کا حصہ رہتے ہوئے اُسی سماج کے لئے کچھ کرنے کا شوق جب انسان میں پروان چڑھتا ہے تو یہ کام معاشرتی اقدار کا حصہ بن جاتا ہے ۔ اپنی چھوٹی سی کوشش کے ذریعہ انسانوں کی خدمت کرتے ہوئے اپنے جوش وجنون اور انفرادی کام سے اُسی سماج میں منفرد مقام بنانا بڑی بات ہے ۔ ہجوم سے الگ ہونے کی چاہ، انسانیت کے لئے مثال بننے کی امیدوار اپنے جذبہ سے انسانوں کا سہارا بننا عام بات نہیں ہے ۔ایک ایسی ہی مثال شہر حیدرآباد میں اسسٹنٹ سب انسپکٹر سید معراج الدین حیدری نے پیش کی ہے جو اپنی منفرد سعی سے سماج کا دیا ہوا اُسی کو لوٹا رہے ہیں ۔ ان کا احساس ہے کہ سماج نے آپ کو کیا دیا ہے نہ دیکھیں بلکہ آپ نے سماج کو کیا دیا ہے ، اُس پر غوروفکر کرنے کی ضرورت ہے ۔آج اُن کی یہ کوشش انہیں دوسروں میں ممتاز بناتی ہے کیونکہ سماج کے لئے کچھ کرنے کی جستجو اور اسی جستجو کے ساتھ خوابوں کے لئے لڑنا عام بات نہیں ہے ۔سید معراج الدین بھی اس کی واضح مثال ہیں جولوگوں کی تکلیف کو خود کی تکلیف سمجھتے ہوئے ان کی مدد کرتے ہیں۔شہر حیدرآباد کے یوسف گوڑہ کے رہنے والے معراج الدین ،بیگم پیٹ چوراہے پر تعینات ہیں جو ضرورت مند سواروں کو مفت میں پٹرول فراہم کرتے ہوئے انوکھی خدمت کررہے ہیں۔بیگم پیٹ چوراہے پر آپ کی گاڑی میں پٹرول ختم ہوجائے تو پریشانی کی کوئی بات نہیں ہے کیونکہ سید معراج الدین آپ کی مدد کو فوری طورپر پہنچ جائیں گے ۔ان کے ہاتھ میں پٹرول کی بوتل ہوگی ۔وہ اپنی اس انوکھی پہل کے ذریعہ نہ صرف اپنے محکمہ بلکہ سماج میں بھی علحدہ مقام بناچکے ہیں۔پٹرول ختم ہونے پر گاڑی ڈھکیلنے والوں کی مدد کرنا اور انہیں مفت میں پٹرول فراہم کرنا ان کے فرض کا حصہ بن چکا ہے ۔ایسے افراد کے لئے ہی وہ اپنی اسکوٹی میں پٹرول کی چھ بوتلیں رکھتے ہیں۔ان کا ماننا ہے کہ سماج کی مدد کرنے کی ایک اسٹوری نے ان میں یہ جذبہ پیداکیا اور وہ سماج کو اُسی کا دیا ہوا لوٹارہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ ایک دفعہ این ڈی ٹی وی پر انہوں نے خبروں میں ایک اسٹوری دیکھی جو کا فی متاثرکن تھی ۔اس اسٹوری میں دکھایا گیا تھا کہ ایک وظیفہ یا ب اپنے وظیفہ کی رقم سے سڑکوں کے گڑھے بھرنے کا کام کررہا ہے ۔یہ دراصل تقریبا ایک سال پہلے کی بات ہے ۔اسی اسٹوری نے ان کے ذہن میں سماج کے لئے کچھ کر نے کی چاہ پیداکی اور اُسی چاہ کو انہوں نے عملی طورپر کرکے دکھایا اور ان کی اسی کو شش نے ان کو نمایاں حیثیت دی ۔ہرکام رقم کے لئے یا پھر مفاد یا پھر ذاتی تشہیر کے لئے کرنا ایک الگ بات ہے لیکن اس طرح کی بے لوث سماجی خدمت کسی جذبہ کے ساتھ کرنا لائق تحسین کارنامہ ہے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT