Thursday , August 17 2017
Home / ہندوستان / پیاز کی قیمت بدستور بے قابو، مہنگائی کی مار جھیلنے پر عوام مجبور

پیاز کی قیمت بدستور بے قابو، مہنگائی کی مار جھیلنے پر عوام مجبور

نئی دہلی 22 اگسٹ (سیاست ڈاٹ کام) ایشیاء کی سب سے بڑی پیاز مارکٹ لاسل گاؤں مہاراشٹرا میں آج پیاز کی ہول سیل قیمت فی کیلو 57 روپئے تک پہنچ گئی جس کے نتیجہ میں ملک کے بیشتر مقامات پر پیاز کی چلر فروشی کی قیمت میں مزید اضافہ ہوجائے گا اور صارفین کو مہنگائی کی مار جھیلنی پڑے گی۔ دارالحکومت دہلی اور ملک کے دیگر مارکٹوں میں پیاز کی چلر فروشی قیمت فی کیلو 80 تک ہوگئی ہے جوکہ فصل کے معیار پر منحصر ہے۔ نیشنل ہارٹیکلچر ریسرچ اینڈ ڈیولپمنٹ فاؤنڈیشن کے اعداد و شمار کے مطابق لاسل گاؤں میں آج پیاز کی ہول سیل فی کیلو 55 روپئے سے 57 ہوگئی ہے۔ تاہم سرکاری اطلاعات میں بتایا گیا ہے کہ پیاز کی فی کیلو چلر فروش قیمت قومی دارالحکومت میں 66 روپئے، ممبئی میں 50 روپئے اور چینائی اور کولکتہ میں 52 روپئے میں فروخت کی جارہی ہے۔ دریں اثناء مرکزی وزیر اُمور صارفین نے ریاستی حکومتوں کو ہدایت دی ہے کہ پیاز کی ذخیرہ اندوزی اور بلیک مارکٹنگ کے خلاف کارروائی کی جائے لیکن کسی بھی سنجیدہ اقدامات نہیں کئے ہیں۔ جبکہ ماہرین کا خیال ہے کہ بلیک مارکٹنگ اور ہورڈنگ کی وجہ سے پیاز کی قیمت میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے۔ واضح رہے کہ واجپائی کے دور حکومت میں بھی پیاز کی قیمت 100 روپئے کیلو تک ہوگئی تھی اور اب دوبارہ بی جے پی اقتدار میں آنے کے بعد اس کی قیمت بے قابو ہوگئی ہے جوکہ تاجروں کی ہمنوا پارٹی تصور کی جاتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT