Sunday , August 20 2017
Home / جرائم و حادثات / پیرس طرز یا کسی بھی نوعیت کے حملوں پر قابو پانے پولیس تیار

پیرس طرز یا کسی بھی نوعیت کے حملوں پر قابو پانے پولیس تیار

ریاستی انٹلی جنس ملک میں سرفہرست ، ڈی جی پی تلنگانہ انوراگ شرما کی میٹ دی پریس
حیدرآباد ۔ /9 ڈسمبر (سیاست نیوز) ڈائرکٹر جنرل آف پولیس تلنگانہ مسٹر انوراگ شرما نے آج بتایا کہ پیرس کی طرز یا کسی بھی قسم کے دہشت گردانہ حملہ سے نمٹنے کیلئے ریاستی پولیس تیار ہے ۔ تلنگانہ اسٹیٹ یونین آف ورکنگ جرنلسٹس کی جانب سے منعقدہ ’’میٹ دی پریس ‘‘ کے موقع پر ڈی جی پی نے اپنے خطاب میں کہا کہ ریاستی انٹلیجنس شعبہ ملک میں سرفہرست ہے اور ناگہانی صورتحال سے مقابلہ کرنے اور دہشت گردانہ حملے کو ناکام بنانے کیلئے دونوں شہروں میں انٹرسیپٹر گاڑیوں کو متعین کیا گیا ہے جس میں عصری ہتھیاروں سے لیس  پولیس عملہ موجود ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ دہشت گرد حملوں سے نمٹنے کیلئے قائم کئے گئے انسداد دہشت گرد ایکشن اسکواڈ آکٹوپس بھی چوکس ہے اور کسی بھی قسم کے حملے کا منہ توڑ جواب دینے کیلئے تیار ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ سوشیل میڈیا کے ذریعہ انتہاپسند تنظیمیں نوجوانوں کو راغب کررہی ہیں اور داعش میں شمولیت کیلئے بعض حیدرآبادی نوجوان انتہاپسندوں کے بہکاوے میں آگئے تھے لیکن پولیس نے ان کی کامیاب طور پر کونسلنگ کی اور ان کے والدین کو بروقت ان کے بچوں کی سرگرمیوں سے واقف کروایا ۔ انہوں نے بتایا کہ انٹلیجنس عملہ سوشیل نیٹ ورکنگ ویب سائیٹس کے اکاونٹس پر نظر رکھے ہوئے ہیں اور مشتبہ افراد کی سرگرمیوں پر کڑی نظر رکھی جارہی ہے ۔ مسٹر انوراگ شرما نے بتایا کہ ریاست تلنگانہ کے پہلے پولیس سربراہ کی حیثیت سے خدمات انجام دینے پر انہیں بے حد خوشی ہے اور ریاست میں لا اینڈ آرڈر کی صورتحال برقرار رہنے کیلئے ہرممکن کوشش کی جارہی ہے ۔ مسٹر شرما نے مزید بتایا کہ ریاست میں جملہ 57217 پولیس فورس ہے لیکن اس میں 15 ہزار سے زائد مخلوعہ جائیدادیں ہیں اور ان جائیدادوں پر تقررات کیلئے بڑے پیمانے پر عنقریب اعلامیہ جاری کیا گیا ۔ ڈی جی پی نے بتایا کہ پولیس فورس میں نوجوانوں کی بھرتی کیلئے انہیں راغب کیا جارہا ہے اور اس سلسلے میں پانچ کیلو میٹر کی دوڑ کو برخاست کیا گیا ہے جبکہ تقررات کیلئے عمر کی حد میں بھی تین سال اضافہ کئے گئے ہیں ۔ انہوں نے بتایا کہ سیول پولیس تقررات میں خواتین کو اولین ترجیح دی جائے گی

 

اور تقررات کے دوران خواتین کیلئے 33 فیصد ریزرویشن پر عمل کیا جائے گا ۔ مسٹر شرما نے بتایا کہ ریاست تلنگانہ کی تشکیل کے بعد انہیں چیف منسٹر سے واضح طور پر ہدایت حاصل ہوئی ہے جس میں لا اینڈ آرڈر کی برقراری کو اولین ترجیح دینے کی ہدایت دی گئی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ پولیس فورس کو مستحکم کرنے کیلئے تلنگانہ حکومت نے 4 ہزار سے زائد نئی گاڑیاں خریدی ہیں اور عصری کمیونیکیشن سسٹم بھی حاصل کیا گیا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ عوام کے درمیان پولیس کی موجودگی میں اضافہ کیلئے پولیس پٹرولنگ گاڑیوں کا استعمال کیا جارہا ہے اور ڈیجیٹل کمیونیکیشن سسٹم کے ذریعہ اضلاع میں حیدرآباد سے حالات پر نظر رکھی جارہی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ عنقریب شہر حیدرآباد میں ایک لاکھ سی سی ٹی وی کیمرے نصب کئے جائیں گے جس کے لئے حکومت کا تعاون حاصل ہے اور تلنگانہ پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت عوام کو بھی سی سی ٹی وی کیمرے نصب کرنے کی ترغیب دی جارہی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ کامیاب پولیسنگ کیلئے عوام کا تعاون بے حد ضروری ہے اور عوام سے بہتر رابطہ قائم کرنے کیلئے فیس بک اور دیگر سوشیل نیٹ ورکنگ ویب سائیٹ کا بھرپور استعمال کیا جارہا ہے ۔ مسٹر انوراگ شرما نے بتایا کہ حیدرآباد و سائبر آباد میں عوام کی جانب سے پولیس اسٹیشن میں درخواست داخل کئے جانے اور اس پر کارروائی کو یقینی بنانے کیلئے پٹیشن مانیٹرنگ سسٹم کا آغاز کیا گیا ہے ۔ ٹریفک کے بہاؤ کو بہتر بنانے کیلئے دونوں شہروں میں 350 ٹریفک جنکشنس پر سی سی ٹی وی کیمروں کے ذریعہ ٹریفک کے بہاؤ پر نظر رکھی جارہی ہے اور ای چالان کے ذریعہ ٹریفک قوانین کی خلاف ورزی کرنے والوں کو چالانات روانہ کئے جارہے ۔ انہوں نے بتایا کہ محکمہ پولیس کو کرپشن سے پاک کرنے کیلئے موثر اقدامات کئے جارہے ہیں اور شہر میں فی پولیس اسٹیشن کو بطور ماہانہ اخراجات 75 ہزار روپئے فراہم کئے جارہے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT