Wednesday , August 23 2017
Home / Top Stories / پیشگی اطلاعات کے باوجود حملہ روکنے میں ناکامی کیوں؟ اپوزیشن

پیشگی اطلاعات کے باوجود حملہ روکنے میں ناکامی کیوں؟ اپوزیشن

Bengaluru : Congress Vice President Rahul Gandhi speaks at the launch of commemorative edition of National Herald newspaper, in Bengaluru on Monday. PTI Photo by Shailendra Bhojak (PTI6_12_2017_000148A)

حکومت محاسبہ کرے ۔ 18 اپوزیشن جماعتوں کے اجلاس میں قرار داد منظور ۔ حملہ سنگین اور ناقابل قبول سکیوریٹی نقص ۔ راہول گاندھی کا رد عمل

نئی دہلی 11 جولائی ( سیاست ڈاٹ کام ) اپوزیشن جماعتوں نے آج حکومت سے کہا کہ وہ امرناتھ یاتریوں پر قبل از وقت انٹلی جنس اطلاعات کے باوجود ہوئے بزدلانہ اور بہیمانہ دہشت گردانہ حملہ کو روکنے میں اپنی ناکامی کا محاسبہ کرے ۔ 18 اپوزیشن جماعتوں نے ‘ جن کا پارلیمنٹ کی لائبریری میں نائب صدارتی امیدوار کے انتخاب کیلئے اجلاس منعقد ہوا تھا ‘ ایک قرار داد منظور کرتے ہوئے کل ہوئے دہشت گردانہ حملہ کی مذمت کی گئی ہے ۔ اس قرار داد میں کہا گیا ہے کہ یہ حملہ در اصل انسانیت پر اور ہندوستان کی کثرت میں وحدت کی صفت پر حملہ تھا ۔ اس قرار داد میں کہا گیا ہے کہ حکومت کو یہ محاسبہ کرنے کی ضرورت ہے کہ انٹلی جنس ایجنسیوں کی جانب سے قبل از وقت اندیشوں کے اظہار کے باوجود حکومت اس حملہ کو روکنے میں کیوں ناکام ہوئی ہے ۔ قرار داد میں کہا گیا ہے کہ اپوزیشن جماعتوں کے قائدین امرناتھ یاتریوں پر اس بہیمانہ اور بزدلانہ دہشت گردانہ حملہ کی شدید مذمت کرتے ہیں قرار داد کے بموجب ان اپوزیشن جماعتوں نے مرنے والوں کے لواحقین سے ‘ جو اش مشکل اور مغموم وقت میںہیں ‘ مکمل اظہار ہمدردی کیا گیا ہے ۔ کہا گیا ہے کہ یہ در اصل انسانیت پر حملہ ہے اور ہندوستان کی کثرت میں وحدت والی صفت پر حملہ ہے ۔ یہ در اصل انسانی اقدار اور کشمیریت پر حملہ ہے ۔ ان جماعتوں نے قرار داد میں حکومت سے کہا کہ وہ اپنے تمام وسائل کا استعمال کرتے ہوئے اس غیر انسانی اور بہیمانہ حملہ کرنے والے مرتکبین کو کیفر کردار تک پہونچانے اقدامات کرے ۔ اس دوران کانگریس کے نائب صدر راہول گاندھی نے اس حملہ کو انتہائی سنگین اور ناقابل قبول سکیوریٹی نقص قرار دیا ہے اور وزیر اعظم نریندر مودی سے کہا کہ وہ اس حملہ کی ذمہ داری قبول کریں۔

انہوں نے اپنے ٹوئیٹر پر کہا کہ یہ ایک انتہائی سنگین اور ناقابل قبول سکیوریٹی نقص ہے اور وزیر اعظم کو چاہئے کہ وہ اس کی ذمہ داری قبول کریںاور اس بات کو یقینی بنائیں کہ مستقبل میں اس طرح کے حملوں کا اعادہ نہیں ہوگا ۔ انہوں نے اپنے ٹوئیٹر پر کہا کہ اس طرح کے بزدلوں سے ہندوستان کبھی خوفزدہ نہیں ہوگا ۔ راجیہ سبھا میں قائد اپوزیشن غلام نبی آزاد نے کہا کہ 18 اپوزیشن جماعتوں کے قائدین نے امرناتھ یاتریوں پر ہوئے حملہ میں مرنے والوں کی یاد میں اپنے اجلاس کے دوران دو منٹ کی خاموشی منائی ۔ کل رات یاتریوں کی بس فائرنگ کا نشانہ بنی تھی جس میں سات افراد ہلاک ہوگئے تھے جن میں چھ خواتین شامل تھیں۔ آج اپوزیشن جماعتوں کا اجلاس کانگریس کی صدر سونیا گاندھی کی جانب سے طلب کیا گیا تھا تاکہ نائب صدارتی انتخاب کیلئے اپوزیشن کے امیدوار کا انتخاب کیا جاسکے ۔ اس اجلاس میں دو سابق وزرائے اعظم ڈاکٹر منموہن سنگھ اور مسٹر ایچ ڈی دیوے گوڑا نے شرکت کی ۔ اس کے علاوہ اپوزیشن جماعتوں کے قائدین جنتادل یو کے شرد یادو ‘ سی پی ایم کے سیتا رام یچوری ‘ سی پی آئی کے سدھاکر ریڈی ‘ ترنمول کانگریس کے ڈیرک اوبرائین سماجوادی پارٹی کے نریش اگروال ‘ بہوجن سماج پارٹی کے ستیش چندرا مصرا ‘ نیشنل کانفرنس کے عمر عبداللہ اور این سی پی کے پرفل پٹیل شامل ہیں۔ اجلاس میں شریک دوسرے قائدین میں آر جے ڈی کے پرکاش یادو ‘ آر ایل ڈی کے اجیت سنگھ اور جھارکھنڈ مکتی مورچہ کے ہیمنت سورین بھی شریک تھے ۔ کانگریس قائدین راہول گاندھی ‘ غلام نبی آزاد ‘ ملکارجن گھرکے اور احمد پٹیل بھی شریک اجلاس رہے ۔

TOPPOPULARRECENT