Thursday , May 25 2017
Home / جرائم و حادثات / پیٹلہ برج میں انہدامی کارروائی ،مسلم خاتون بے سہارا

پیٹلہ برج میں انہدامی کارروائی ،مسلم خاتون بے سہارا

حیدرآباد ۔ 11 ۔ مارچ : ( سیاست نیوز ) : پیٹلہ برج پولیس کوارٹرس کے قریب انہدامی کارروائی تنقید کا نشانہ بن گئی ہے ۔ بتایا جاتا ہے کہ اس علاقہ سے قدیم قبضوں کو برخاست کرنے کے لیے انجام دی گئی اس کارروائی میں ایک مسلم خاتون کو بے سہارا کردیا گیا ۔ جب کہ پولیس حکام اس کارروائی کو حق بہ جانب مانتے ہیں لیکن خاتون کا دعویٰ ہے کہ وہ ہر لحاظ سے اس جائیداد کی حقدار ہے اور عدالت نے بھی اس خاتون کے حق میں فیصلہ سنایا ہے ۔ پولیس کی انہدامی کارروائی میں اپنا سہارا چھین جانے کے بعد شدید تکلیف کا شکار خاتون مینافاطمہ نے بتایا کہ سال 2005 سے انہیں مسلسل ہراساں و پریشان کیا جارہا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ سال 2008 میں انہوں نے اس جائیداد کے متعلق اپنے دعویٰ اور عدالتی فیصلے میں مداخلت پر ایک لیگل نوٹس بھی روانہ کیا تھا ۔ سال 2009 میں پولیس کی جانب سے ای پی ڈالے جانے کے بعد خود سال 2011 میں اس کو برخاست کرلیا گیا ۔ باوجود اس کے دیگر مکانات کی انہدامی کارروائی میں انہیں بھی زد میں لے لیا گیا ۔ انہوں نے بتایا کہ اس بات کی انہیں کوئی قبل از وقت اطلاع بھی نہیں دی گئی ۔ انہوں نے الزام لگاتے ہوئے کہا کہ چارمینار پولیس اسٹیشن سے وابستہ سب انسپکٹر راجہ ریڈی نے ان سے بدسلوکی کی جب کہ درجنوں خاتون پولیس ملازمین موجود تھے ۔ انہوں نے بتایا کہ برقی ، پانی ، راشن کارڈ ، پاسپورٹ اور آدھار کارڈ ، رجسٹریشن ڈاکومنٹس تمام ان کے نام پر موجود ہے ۔ انہوں نے کہا کہ گذشتہ چار پیڑیوں سے ان کا خاندان پولیس محکمہ سے وابستہ ہے اور تاحال ان کے بھائی پولیس ہیڈکوارٹر میں زیر خدمات ہیں ۔ یہ جائیداد ان کے والد محمد نور خاں کی ہے جو ان کے نام کردی گئی ہے ۔ یہ جائیداد ان کے والد نے پولیس کے اس وقت کے ڈریس فنڈز کی رقم سے خریدی گئی ۔ انہوں نے پولیس اور حکومت سے انصاف کا مطالبہ کیا ہے ۔۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT