Friday , August 18 2017
Home / Top Stories / پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کیساتھ حکومت تشکیل دینے بی جے پی کا فیصلہ

پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کیساتھ حکومت تشکیل دینے بی جے پی کا فیصلہ

باہمی مشاورت کے بعد گورنر سے ملاقات، سابق ڈپٹی چیف منسٹر نرمل سنگھ دوبارہ نامزد
جموں۔ /25مارچ، ( سیاست ڈاٹ کام ) بی جے پی مقننہ پارٹی نے آج یہ اتفاق رائے سے فیصلہ کیا ہے کہ جموں و کشمیر میں اتحادی جماعت پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کے تعاون سے حکومت تشکیل دی جائے اور وزارت اعلیٰ کی امیدوار محبوبہ مفتی کی تائید کی جائے۔ اس موقع پر سینئر لیڈر اور سابق ڈپٹی چیف منسٹر نرمل سنگھ کو مقننہ پارٹی کا لیڈر منتخب کرلیا گیا جو کہ ڈپٹی چیف منسٹر عہدہ کیلئے بی جے پی امیدوار ہوں گے۔مقننہ پارٹی اجلاس کے بعد میڈیاسے بات چیت کرتے ہوئے بی جے پی نیشنل سکریٹری رام مادھو نے کہا کہ پی ڈی پی اور بی جے پی کا وفد بہت جلد گورنر سے ملاقات کرکے حکومت سازی کا دعویٰ کرے گا۔ ریاستی صدر بی جے پی مسٹر ست شرما نے بتایا کہ چونکہ ہم نے پی ڈی پی کے ساتھ تشکیل حکومت کا فیصلہ کرلیا۔ وزارت اعلیٰ کے امیدوار کی حمایت کی جائے گی۔ ایک دن قبل پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی نے محبوبہ مفتی کو اپنا لیڈر اور چیف منسٹر عہدہ کیلئے پارٹی امیدوار منتخب کیا تھا جس کے بعد بی جے پی مقننہ پارٹی نے یہ قطعی فیصلہ کیا۔ مسٹر رام مادھو نے بتایا کہ تشکیل حکومت کے مسئلہ پر پی ڈی پی کے ساتھ کوئی اختلافات نہیں ہیں، جب ہم ایک اتحاد میں شامل ہیں تو ایک دوسرے کی ترجیجات کا احترام ضروری ہوجاتا ہے اور ہم ریاست میں ایک صحتمند اتحاد کی مثال قائم کرنا چاہتے ہیں۔

مرکزی وزیر جتیندر سنگھ جو کہ بی جے پی اجلاس میں شریک تھے بتایا کہ حلیف جماعتیں بہت جلد ملاقات کرکے تشکیل حکومت کے طریقہ کار پر تبادلہ خیال کریں گے۔ دریں اثناء بی جے پی کے ریاستی صدر ست شرما نے بتایا کہ گورنر این این ووہرا سے آج طئے شدہ ملاقات ناگزیر وجوہات کی بناء نہیں ہوسکی۔ پہلے ہم بی ڈی پی قیادت سے مشاوت کے بعد ریاستی گورنر سے ملاقات کرکے مقننہ پارٹی کے فیصلہ سے واقف کروائیں گے اور پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کی تائید سے متعلق ایک مکتوب پیش کیا جائے گا۔ قلمدانوں کی تقسیم پر ایک سوال کے جواب میں مسٹر رام مادھو نے بتایا کہ پہلے ہم حکومت سازی کا دعویٰ پیش کریں گے اور گورنر کی منظوری کے بعد کابینہ کے حجم اور قلمدانوں کو قطعیت دی جائے گی۔ انہوں نے یہ بھی وضاحت کی کہ بی جے پی اور پی ڈی پی میں کوئی اختلاف نہیں ہے جس کی تصدیق محبوبہ مفتی نے بھی کردی ہے۔ محبوبہ مفتی نے کل یہ کہا تھا کہ وہ تشکیل حکومت کیلئے تیار ہیں اور مرکزی حکومت پر انہیں مکمل اعتماد ہے اور ریاست میں ایک مستحکم اور ایک بہترین حکومت تشکیل دی جائے گی جو کہ عوام کی ترقی اور خوشحالی کیلئے کام کرے گی۔ بی جے پی لیڈر نے کہا کہ دونوں پارٹیوں نے ایک سال قبل جس مشروط ایجنڈہ پر اتفاق کیا تھا اس کی بناء پر نئی حکومت تشکیل دی جائے گی اور اس خصوص میں مشترکہ اقل ترین پروگرام سے رہنمائی حاصل کی جائے گی۔

غریبوں کی ضمانت کیلئے قواعد کی
سفارش:چوہان
نئی دہلی۔/25مارچ، ( سیاست ڈاٹ کام ) ایک ایسے وقت جب ضمانت کی منظوری کیلئے حکومت یکساں قواعد کی حمایت کررہی ہے۔ قومی لاء ( قانونی ) کمیشن کے چیرمین ایس چوہان نے کہا کہ ججوں کیلئے رہنمایانہ خطوط جاری کرنے ی ضرورت نہیں ہے گو کہ اس بات کو یقینی بنانے کیلئے وہ ( کمیشن ) سفارش کرسکتا ہے۔ غریب کو دشواریوں سے دوچار ہونے نہ دیا جائے۔ اس کے ساتھ جسٹس چوہان نے یہ بھی کہا کہ ضمانت کی اجرائی کے ضمن میں وہ ججوں کو رہنمایانہ خطوط کی اجرائی کی سفارش کانظریہ مسترد نہیں کررہے ہیں۔اور کمیشن اس نظریہ پر غور کرسکتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT