Wednesday , September 20 2017
Home / کھیل کی خبریں / پی سی بی کو سری لنکا سے سیریز پر اخراجات کی تفصیل مطلوب

پی سی بی کو سری لنکا سے سیریز پر اخراجات کی تفصیل مطلوب

لاہور ، 17 مئی (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے رواں سال اکتوبر میں ویسٹ انڈیز کے خلاف سیریز کی میزبانی کیلئے سری لنکا کرکٹ سے رابطہ کرتے ہوئے سیریز پر ممکنہ مالی اخراجات کی تفصیلات طلب کئے ہیں۔ پاکستان اور ویسٹ انڈیز کے درمیان سیریز دو ٹسٹ، تین ونڈے اور دو ٹی ٹوئنٹی میچوں پر مشتمل ہے، جو متحدہ عرب امارات میں طے کی گئی تھی۔ تاہم اخراجات کی زیادتی کی وجہ سے پی سی بی نے سری لنکا کو میزبانی کیلئے متبادل ملک کے طور پر منتخب کر لیا ہے۔ پی سی بی نے سری لنکا کرکٹ سے سیریز کی میزبانی پر مالی اخراجات کی تفصیلات طلب کی ہیں۔ پی سی بی کے ترجمان نے کرکٹ ویب سائٹ ’کرک اِنفو‘ کو انٹرویو میں کہا : ’’ہمیں متحدہ عرب امارات میں میچوں کی میزبانی سے بڑھتے ہوئے اخراجات پر تشویش ہے اور اگر سری لنکا ہمیں مناسب لگا تو ہم اس کو متبادل کے طور پر دیکھیں گے۔‘‘ قبل ازیں پی سی بی ایگزیکٹیو کمیٹی کے چیئرمین نجم سیٹھی نے اپنے بیان میں کہا تھا کہ بورڈ متحدہ عرب امارات میں اضافی مالی اخراجات کے باعث سیریز کی میزبانی سری لنکا منتقلی پر غور کررہا ہے۔ سری لنکا کرکٹ کے سکریٹری موہن ڈی سلوا نے پی سی بی کی جانب سے رابطے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا، ’’ہاں انھوں نے ہم سے رابطہ کیا ہے، ہم مل بیٹھ کر بجٹ بنائیں گے اور واپس اُن کو بھیج دیں گے‘‘۔ ڈی سلوا نے کہا کہ یہ ان پر منحصر ہے کہ ہماری جانب سے بھیجا گیا بجٹ ان کو سیریز کی میزبانی یہاں کرنے کیلئے مناسب لگتا ہے یا نہیں۔ واضح رہے کہ 3 مارچ 2009ء میں لاہور میں سری لنکن ٹیم پر حملے کے بعد سے کوئی انٹرنیشنل ٹیم پاکستان نہیں آئی اور پی سی بی نے متحدہ عرب امارات (یو اے ای) کو ہوم سیریز کی میزبانی کیلئے متبادل کے طورپر منتخب کیا تھا۔ پی سی بی کو متحدہ عرب امارات سے میزبانی دوسری جگہ منتقل کرنے کا خیال پاکستان سوپر لیگ (پی ایس ایل) کے انعقاد کے بعد آیا جب پی سی بی کو دو ہفتے جاری رہنے والے ٹورنمنٹ کیلئے 3 ملین ڈالر کے اخراجات برداشت کرنے پڑے تھے۔ دوسری جانب پی سی بی حکام نے باہمی سیریز کی میزبانی کیلئے اخراجات کے اضافے کے حوالے سے بات کرنے کیلئے لاہور میں دبئی اسپورٹس سٹی اور شارجہ اسٹیڈیم کے حکام سے ملاقات کی تھی۔ پی سی بی نے ماضی میں باہمی سیریز کے متحدہ عرب امارات میں انعقاد کیلئے آمدنی، ٹکٹ اور گراؤنڈز میں میزبانی کے ذریعے حاصل ہونے والی آمدنی کو تقسیم کرتا رہا ہے لیکن پی ایس ایل میں کرائے کی مد میں گراؤنڈز حاصل کئے گئے تھے۔ دوسری جانب پاکستان کو سری لنکا میں ویسٹ انڈیز سے سیریز کی میزبانی کیلئے سب سے اہم خطرہ موسم سے ہو سکتا ہے کیونکہ اکتوبر اور نومبر میں سری لنکا عام طور پر مانسون کی بارشوں کی زد میں رہتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT