Thursday , August 17 2017
Home / شہر کی خبریں / چارمینار پیدل راہرو پراجکٹ کا احیاء پھر ایک مرتبہ مسدود

چارمینار پیدل راہرو پراجکٹ کا احیاء پھر ایک مرتبہ مسدود

سیاسی مفاد پرستی ترقی میں رکاوٹ، کھدوائی کے بعد ادھورے کام سے تاجرین ناراض
حیدرآباد 6 مارچ (سیاست نیوز) چارمینار پیدل راہرو پراجکٹ کے احیاء کا کام ایک مرتبہ پھر روک دیا گیا۔ دو یوم قبل مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد نے چارمینار سے لاڈ بازار جانے والی سڑک پر پیدل راہرو پراجکٹ کے سلسلہ میں بچھائی جانے والی خصوصی سڑک کے لئے کھدوائی کا عمل شروع کیا تھا لیکن مقامی سیاسی قائدین نے کھدوائی کو رکوادیا جس سے ایسا محسوس ہوتا ہے کہ پرانے شہر کے عوام بالخصوص علاقہ چارمینار کی ترقی میں سیاستدانوں کو دلچسپی نہیں ہے بلکہ وہ اس علاقہ کو پسماندگی کا شکار بنائے رکھنا چاہتے ہیں۔ برسہا برس سے جاری چارمینار پیدل راہرو پراجکٹ کی تکمیل میں کئی رکاوٹیں پیدا کی جاتی رہیں لیکن گزشتہ چند برسوں کے دوران کچھ حد تک اس پراجکٹ پر بلدی عہدیداروں نے تیز رفتار کام انجام دیتے ہوئے اسے قطعیت دینے کا فیصلہ کیا تھا اور گلزار حوض سے چارمینار کے قریب تک خصوصی پتھر بچھاتے ہوئے چارمینار پیدل راہرو پراجکٹ کے تعمیری کاموں کا عملاً آغاز کردیا گیا تھا۔ بعدازاں اسی پراجکٹ کے تحت سردار محل سے چارمینار آنے والی سڑک پر بھی مکمل خصوصی پتھر بچھاتے ہوئے پراجکٹ کے تعمیری کاموں کو وسعت دی گئی لیکن ایک مرتبہ پھر سیاسی مفاد پرستی کا شکار بناتے ہوئے اس پراجکٹ کو روک دیا گیا تھا۔ بعدازاں یہ پراجکٹ قریب دو سال سے جوں کا توں رُکا رہا اور اب جبکہ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے انتخابات ہوچکے ہیں تو فوری طور پر عہدیداروں نے چارمینار پیدل راہرو پراجکٹ کے تعمیری کاموں کا ازسرنو آغاز کردیا تھا لیکن جیسے ہی لاڈ بازار میں کھدوائی کا عمل شروع ہوا تو فوری اُسے سیاسی دباؤ کے تحت روک دیا گیا جس سے لاڈ بازار کے تاجرین میں ناراضگی پیدا ہوچکی ہے چونکہ کھدوائی کا جو عمل شروع ہوا تھا اُسے رکوانے کے بعد ویسے ہی چھوڑ دیا گیا اور اس کھدوائی کے سبب لاڈ بازار کی دوکانات میں دھول اور گرد جمع ہونے لگی ہے۔ گزشتہ دو یوم سے تاجرین لاڈ بازار کی جانب سے مسئلہ کے فی الفور حل کے لئے توجہ دہانی کروائی جارہی ہے لیکن بلدی عہدیداروں کا کہنا ہے کہ جب ترقیاتی عمل شروع کیا گیا تھا تو اُسے رکوادیا گیا اور پھر یہ شکایت کی جارہی ہے کہ کھدوائی کے سبب عوام کو تکلیف کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ ذرائع سے موصولہ اطلاعات کے بموجب مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے منصوبہ کے مطابق چارمینار پیدل راہرو پراجکٹ پر عمل آوری کو یقینی بنانا ناگزیر ہے۔ اسی لئے بلدی عہدیداروں نے پراجکٹ کے ترقیاتی کاموں کا آغاز کیا تھا۔ بتایا جاتا ہے کہ اگر اسی طرح پراجکٹ کو روکا جاتا رہے تو ایسی صورت میں نہ صرف علاقہ کے عوام کو ترقی سے محروم ہونا پڑے گا بلکہ پراجکٹ کی عدم تکمیل کی صورت میں تخمینی لاگت میں بھی بھاری اضافہ ہوتا رہے گا جس کا بوجھ سرکاری خزانہ پر عائد ہوگا۔

TOPPOPULARRECENT