Thursday , October 19 2017
Home / ہندوستان / چار افراد کی طرف سے عصمت ریزی عملی طور پر ناممکن:ملائم سنگھ

چار افراد کی طرف سے عصمت ریزی عملی طور پر ناممکن:ملائم سنگھ

لکھنو ۔ 19 ۔ اگست (سیاست ڈاٹ کام) اترپردیش میں برسر اقتدار سماج وادی پارٹی کے سربراہ ملائم سنگھ یادو نے آج ایک انوکھی منطق پیش کرتے ہوئے کہا کہ کسی ایک لڑکی کی چار افراد کی جانب سے عصمت ریزی عملی طور پر ناممکن ہے۔ ملائم سنگھ یادو جو لکھنو میں اپنے فرزند و ریاستی چیف منسٹر اکھلیش یادو اور ریاستی وزیر محمد اعظم خان کی موجودگی میں سیکل رکشاؤں کی تقسیم کے موقع پر خطاب کر رہے تھے، کہا کہ عصمت ریزی جیسے جرائم کی سب سے کم شرح اگر ملک میں کہیں ہے تو وہ صرف اترپردیش میں ہے۔ اجتماعی عصمت ریزی کے واقعات پر اظہار خیال کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ’’ایک شخص عصمت ریزی کرتا ہے اور شکایت میں چار نام درج کئے جاتے ہیں‘‘۔ انہوں نے جلسہ کے شرکاء سے سوال کیا کہ ’’کبھی ایسا ہوسکتا ہے کیا؟ ایسا پراکٹیکل (عملی طور پر) ہو ہی نہیں سکتا‘‘۔ واضح رہے کہ کچھ عرصہ قبل ملائم سنگھ یادو نے عصمت ریزی کے مسئلہ پر اظہار خیال کرتے ہوئے یہ ریمارک کیا تھا کہ ’بچوں سے کبھی غلطی ہوجاتی ہے‘۔ ان اس ریمارکس پر سنگین تنازعہ پیدا ہوا تھا۔

TOPPOPULARRECENT