Thursday , August 24 2017
Home / شہر کی خبریں / چالیس انجینئرنگ کالجس بند ہوجائیں گے طلبہ داخلہ نہیں لے رہے ہیں، پانچ کالجس میں ایک بھی طالب علم نہیں

چالیس انجینئرنگ کالجس بند ہوجائیں گے طلبہ داخلہ نہیں لے رہے ہیں، پانچ کالجس میں ایک بھی طالب علم نہیں

حیدرآباد 16 مارچ (سیاست نیوز) تلنگانہ میں 40 خانگی انجینئرنگ اور پالی ٹکنک کالجس بند ہونے والے ہیں۔ آل انڈیا کونسل فار ٹکنیکل ایجوکیشن کو 40 درخواستیں وصول ہوئی ہیں جو تلنگانہ میں خانگی کالجوں کے انتظامیہ نے دی ہیں۔ اس کے علاوہ تین سو کالجس نے طلبہ کی عدم دستیابی کی وجہ سے اگلے تعلیمی سال انڈر گریجویٹس اور پوسٹ گریجویٹ کورسیس میں داخلے کم کرنے اے آئی سی ٹی ای سے رجوع ہوئے ہیں۔ ذرائع نے کہاکہ 2016-17 ء تعلیمی سال سے کئی کالج مینجمنٹس نے کالجس شروع کرنے کا ارادہ نہیں رکھتے کیوں کہ انجینئرنگ پروگرامس میں طلبہ داخلے نہیں لے رہے ہیں۔ 228 کالجس میں کنوینر کوٹہ میں 80 ہزار 313 سیٹس ہیں صرف 53 ہزار 347 طلبہ نے داخلہ لیا ہے۔ 29 ہزار سے زیادہ سیٹس سال  2015-16 ء تعلیمی سال کے دوران خالی ہیں۔ 5 کالجس میں داخلے صفر رہے۔ 29 کالجس میں داخلے دس کے اندر رہے۔ جواہرلال نہرو ٹیکنالوجیکل یونیورسٹی کے سخت گیر الحاق قواعد کی وجہ سے کالج انتظامیہ یا تو کالج بند کرنے یا داخلے گھٹانے پر مجبور ہیں۔ پرائیوٹ کالجس کے انتظامیہ کو اندیشہ ہے کہ انھیں حکومت کی طرف سے فیس واپسی بقایہ جات کا اپنا حصہ بھی نہیں ملے گا۔ حکومت کی طرف سے فیس واپسی بقایہ جات جاری کئے جانے کے بعد امکان ہے کہ کئی کالجس بند ہوجائیں گے۔

TOPPOPULARRECENT