Saturday , October 21 2017
Home / Top Stories / چرچ میں مورتیاں‘ مسجد کی بے حرمتی

چرچ میں مورتیاں‘ مسجد کی بے حرمتی

شرپسندوں کی کارروائی‘ شہر میں فرقہ وارانہ کشیدگی پیدا کرنے کی کوشش
حیدرآباد ۔ 12؍ مارچ ( سیاست نیوز) اترپردیش میں بی جے پی کی جیت کے بعد ریاست میں اشرار کے حوصلے بلند ہوتے دکھائی دے رہے ہیں ۔ اسمبلی انتخابات کے نتائج کے اعلان کے اندرون 24 گھنٹے شرپسندوں کی جانب سے دو مذہبی مقامات کو نشانہ بنایا گیا ۔ پہلے واقعہ میں سلیم نگر کالونی ملک پیٹ میں واقع ایک چرچ میں نامعلوم اشرار نے مورتیاں اور بھگوانوں کے تصاویر چسپا ں کر کے سنسنی پیدا کر دی ۔ اس سلسلہ میں چادرگھاٹ پولیس کو چرچ کے ذمہ داران نے شکایت درج کرائی اور بتایا کہ اتوار کے موقع پرچرچ میں خصوصی عبادت کی غرض سے عیسائی طبقہ کے افراد مورتیاں اور پوسٹرس پائے جانے کے بعد بے چین ہوگئے ہیں ۔چرچ کے ذمہ داران نے الزام عائد کیا کہ پولیس کو بروقت اطلاع دیئے جانے کے باوجود بھی کارروائی سے قاصر رہی ۔ شرپسندی کے ایک اور واقعہ میں حمایت ساگر گنڈی کے قریب اشرار نے ہولی کے موقع پر دیواروں کی بے حرمتی کرتے ہوئے جئے شری رام کے نعرے تحریر کردیئے ۔اس شر انگیزی کے بعد حمایت ساگر کے قریب واقعہ اقلیتی طبقہ سے تعلق رکھنے والے افراد میں بے چینی پیدا ہوگئی اور مقامی پولیس کو اطلاع دیئے جانے کے باوجود بھی ہولی بندوبست کے بہانے وہاں پہنچ کر کارروائی کرنے سے قاصر رہے ۔ مذکورہ دو واقعات سے ایسا ظاہر ہوتا ہے کہ ریاست تلنگانہ میں شرپسند عناصر فرقہ وارانہ ہم آہنگی کو مکدر کر نے کی کوششوں کا آغاز کر دیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT