Monday , August 21 2017
Home / شہر کی خبریں / چندرائن گٹہ حملہ کیس ‘ اسسٹنٹ ڈائرکٹر فارنسک لیب کا بیان قلمبند

چندرائن گٹہ حملہ کیس ‘ اسسٹنٹ ڈائرکٹر فارنسک لیب کا بیان قلمبند

حیدرآباد /9 جنوری ( سیاست نیوز ) چندرائن گٹہ حملہ کیس کی سماعت 21 جنوری تک مکمل کرنے سپریم کورٹ کی ہدایت کے پیش نظر نامپلی سیشنس کورٹ میں روزانہ کے اساس پر کیس کی سماعت کا سلسلہ جاری ہے ۔ آج ایک اسسٹنٹ ڈائرکٹر فورنسک لائبریٹری نے عدالت میں بیان قلمبند کروایا ۔ ڈاکٹر وی وینکٹیشورلو جو بیلسٹک ماہر ہے نے بتایا کہ 2011 میں ڈی سی پی ڈیٹکٹیو کی جانب سے پانچ مکتوب موصول ہوئے ۔ جن میں مختلف اشیا بشمول ہتھیار ملبوسات وغیرہ معائنہ کیلئے بھیجے گئے تھے ۔ ڈاکٹر وینکٹیشورلو نے بتایا کہ مہر بند لفافے میں اشیا کو اسٹیٹ فورنسک لیباریٹری بھیجا گیا تھا جس میں 5 چپل کے جوڑ ، کارتوس ، کاپر جیاکٹ ، چشمہ جس پر خون کے دھبے تھے شامل ہیں ۔ انہوں نے بتایا کہ ایک پین ، سیاہ نائلان کور ، فون گارڈ ، لیدر موبائل فون کور ، اسٹیل کا خنجر اور قصائی کی چاقو جس پر خون کے دھبہ موجود تھے کو فورنسک لیابریٹری میں تجزیہ کیلئے بھیجا گیا تھا ۔ گواہ نے بتایا کہ تحقیقات کے سلسلہ میں سٹی سیکوریٹی ونگ کے ایک پستول بھی بھیجا گیا تھا جبکہ ابراہیم بن یونس یافعی اور ٹی شرٹ اور دیگر ملبوسات بھی لیباریٹری کو تجزیہ کیلئے بھیجے گئے ۔ گواہ نے دیگر اشیا کو بھی اسٹیٹ فورنسک لیباریٹری بھیجنے کی تصدیق کرتے ہوئے اس سلسلے میں رپورٹ بھی تیار کئے جانے کی اطلاع دی ۔ عدالت نے فورنسک ماہر کے بیان کو کل تک کیلئے ملتوی کردیا ۔

TOPPOPULARRECENT