Tuesday , October 17 2017
Home / شہر کی خبریں / چندرا بابو نائیڈو کے اقتدار میں خشک سالی

چندرا بابو نائیڈو کے اقتدار میں خشک سالی

آندھرا پردیش میں دو سال سے عوام پریشان، روجا کا بیان
حیدرآباد۔/18مئی ، ( سیاست نیوز) کیا واقعی نام چندرا ریاست آندھرا پردیش کیلئے راس نہیں ہے؟یا جب بھی ریاست کے چیف منسٹر کا نام چندرا جڑا جاتا ہے اس سے ریاست کو خشک سالی سے دوچار ہونا پڑتا ہے۔ ترقی یافتہ دور میں بھی سیاستداں اندھابھروسہ ہو یا پھر علم نجوم کا بہانہ بناکر عوام کو اپنی طرف راغب کرنے کی کوشش میں لگے رہتے ہیں۔صدر وائی ایس آر کانگریس مسٹر وائی ایس جگن موہن ریڈی نے کرشنا ندی پر بنائے جانے والے آبپاشی پراجکٹ کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے کرنول میں بھوک ہڑتال کا آغاز کیا ہے۔ دو دن سے جاری اس بھوک ہڑتال کیمپ سے مختلف قائدین نے خطاب کیا۔ وائی ایس آر پارٹی قائدمحترمہ روجا نے اپنے انداز دلچسپ انداز میں کئے گئے خطاب کے دوران کہا کہ اگر خشک سالی کو انسان کی شکل میں پیش کیا جائے اور اسے مردانہ لباس پہنایا جائے تو یہ ہو بہ ہو چندرا بابو کی طرح دکھائی دے گا۔ روجا نے  کہا کہ چندرا بابو نائیڈو کے 9سالہ دور اقدار میں 7سال قحط سالی کا سامنا رہا جبکہ گذشتہ دو سال سے انہوں نے اقتدار سنبھالا ہے۔ تب سے ریاست قحط سالی کا شکار ہے۔ محترمہ روجا نے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی سے ملک کے کئی چیف منسٹرس نے ملاقات کرتے ہوئے خشک سالی امداد کا مطالبہ کررہے ہیں جبکہ چیف منسٹر مسٹر چندرا بابو نائیڈو اپنے افراد خاندان کے ساتھ سوئزر لینڈ کا دورہ کیا۔ محترمہ روجا نے کہا کہ 39کروڑ روپئے جو خشک سالی امداد کیلئے جاری کئے گئے اس رقم کے غلط استعمال کا الزام لگایا اور کہا کہ اس رقم کے ذریعہ ہرٹیج فوڈ کا تیار کردہ بٹر ملک تقسیم کررہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT