Monday , August 21 2017
Home / شہر کی خبریں / چندرا بابو پر تلنگانہ کے خلاف سازش رچنے کا الزام

چندرا بابو پر تلنگانہ کے خلاف سازش رچنے کا الزام

چیف منسٹر اے پی ریاست کی مکمل تباہی کیلئے کوشاں ، کے ٹی آر وزیر تلنگانہ کا بیان
حیدرآباد۔ 16 ۔ ستمبر (سیاست نیوز) وزیر پنچایت راج کے ٹی راما راؤ نے چیف منسٹر آندھراپردیش چندرا بابو نائیڈو پر تلنگانہ کے خلاف سازشیں کرنے کا الزام عائد کیا۔ کے ٹی آر نے میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ چندرا بابو نائیڈو تلنگانہ کی تباہی کیلئے ہر ممکن سازش کر رہے ہیں۔ ہر شعبہ میں تلنگانہ کی ترقی میں رکاوٹ پیدا کرنا ان کا مقصد بن چکا ہے ۔ کے ٹی آر نے کہا کہ تلنگانہ کو وہ پانی سے محروم کرنے کیلئے مرکزی حکومت سے مسلسل نمائندگی کر رہے ہیں۔ کے ٹی آر نے کہا کہ چندرا بابو نائیڈو نے مخالف تلنگانہ پالیسی کو ابھی تک جاری رکھا ہے۔ انہوں نے کہا کہ برقی ، پانی اور دیگر شعبوں میں تلنگانہ سے ناانصافی کیلئے چندرا بابو نائیڈو سرگرم ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ٹی آر ایس حکومت دریاؤں کے پانی کے بہتر استعمال اور چھوٹے تالابوں کے تحفظ کے ذریعہ زرعی شعبہ کو مشکلات سے بچانا چاہتی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ گوداوری اور کرشنا سے تلنگانہ کو 1200 ٹی ایم سی پانی حاصل ہونا چاہئے  لیکن چندرا بابو نائیڈو کو اس کے جائز حق سے محروم کرنا چاہتے ہیں۔ گوداوری سے 900 ٹی ایم سی اور کرشنا سے 300 ٹی ایم سی پانی الاٹ کیا گیا۔ اس میں 120 ٹی ایم سی پینے کے پانی کے اغراض کیلئے استعمال کا تلنگانہ کو حق حاصل ہے لیکن صرف 40 ٹی ایم سی پانی ہی استعمال کی اجازت دی گئی۔ کے ٹی آر نے کہا کہ آندھرا حکومت کی سازشوں کے باعث تلنگانہ حکومت کو کئی مشکلات کا سامنا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے تلنگانہ کے 3.5 کروڑ عوام کو صاف پینے کے پانی کی سربراہی کیلئے واٹر گرڈ پروگرام کا آغاز کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آئندہ 3 برسوں میں حکومت ہر گھر کو پینے کے پانی کا کنکشن فراہم کرے گی۔ کے ٹی آر نے کہا کہ اس پراجکٹ کی عدم تکمیل کی صورت میں چیف منسٹر نے دوبارہ عوام سے ووٹ کی اپیل نہ کرنے کا وعدہ کیا ہے ۔ کے ٹی آر نے بتایا کہ حکومت پوری سنجیدگی کے ساتھ اسکیم پر عمل کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ خشک سالی سے متاثرہ علاقوں کی ترقی حکومت کی اولین ترجیح ہے۔

TOPPOPULARRECENT