Friday , August 18 2017
Home / شہر کی خبریں / چندرا بابو کے نام کی شمولیت کا اندیشہ

چندرا بابو کے نام کی شمولیت کا اندیشہ

بشمول تلگودیشم کارکن تین افراد کو نوٹس جاری ‘ آج عدالت میں حاضری کا حکم
حیدرآباد 17 اگست (سیاست نیوز) حیدرآباد۔17اگست ( سیاست نیوز) نوٹ برائے ووٹ اسکام کی تحقیقات کے ضمن میں تلنگانہ کے محکمہ انسداد رشوت ستانی ( اے سی بی ) نے آج مزید تین افراد کے خلاف نوٹس جاری کی ہے ۔ ذرائع کے مطابق اے سی بی نے آندھراپردیش میں تلگودیشم پارٹی کے ایک لیڈر آدی کیشولو کے فرزند سرینواسلو نائیڈو اور ان کے دو ساتھیوں وشنو اور چیتنیہ  کے نام نوٹس جاری کئے ہیں جو بنگلور میں واقع ان کے دفتر پہنچاتے ہوئے منگل کو شہر کی اے سی بی عدالت میں حاضری کی ہدایت کی گئی ہے۔نوٹ برائے ووٹ اسکام میں انٹی کرپشن بیورو کی جانب سے داخل کی گئی چارج شیٹ میں چیف منسٹر آندھرا پردیش مسٹر این چندرا بابو نائیڈو کا نام شامل کئے جانے کا خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے ۔ باوثوق ذرائع نے بتایا کہ سال 2015 میں منعقد ہوئے قانون ساز کونسل انتخابات میں نامزد رکن اسمبلی سباسٹینکو تلگودیشم رکن اسمبلی مسٹر ریونت ریڈی کی جانب سے مبینہ طور پر 50 لاکھ روپئے نقد رقم بطور رشوت ادا کرنے کے دوران اے سی بی نے رنگے ہاتھوں گرفتار کرلیا تھا ۔ تحقیقات کے دوران پولیس نے ایک اور تلگودیشم رکن اسمبلی سنڈرا وینکٹا ویریا اور دیگر افراد کو  گرفتار کیا تھا ۔ حالیہ دنوں اے سی بی نے نوٹ برائے ووٹ اسکام میں ملوث ملزمین کے خلاف پہلی چارج شیٹ عدالت میں داخل کی تھی اور باوثوق ذرائع نے بتایا ہے کہ چیف منسٹر آندھرا پردیش مسٹر این چندرا بابو نائیڈو کا اس چارج شیٹ میں کئی مرتبہ نام لیا گیا ہے ۔ واضح رہے کہ نامزد رکن اسمبلی سباسٹیناور چندرا بابو نائیڈو کے درمیان قانون ساز کونسل انتخابات کیلئے تعاون کرنے سے متعلق ہوئی گفتگو ریکارڈ کی گئی تھی اور بعدازاں اس ریکارڈنگ کو فارنسنک لیباریٹری جانچ کیلئے بھیجا گیا تھا ۔ فارنسنک ماہرین نے بھی عدالت میں اس سلسلہ میں ایک رپورٹ داخل کی ہے ۔ اس سلسلہ میں  اے سی بی اعلی عہدیداروں سے ربط پیدا کئے جانے پر وہ اس بات کی توثیقسے گریز کیا ۔

TOPPOPULARRECENT