Thursday , September 21 2017
Home / ہندوستان / چھتیس گڑھ حکومت نے ماؤیسٹوں کو کروڑ ہا روپئے فراہم کئے تھے

چھتیس گڑھ حکومت نے ماؤیسٹوں کو کروڑ ہا روپئے فراہم کئے تھے

جیرام وادی حملہ سے قبل رقم کی منتقلی ۔ مدھیہ پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر کا الزام
رائے پور 17 اپریل ( سیاست ڈاٹ کام ) کانگریس نے آج الزام عائد کیا کہ چپتیس گڑھ کی برسر اقتدار بی جے پی نے 2013 میں جیرام وادی میں نکسلائیٹس کی جان سے کئے گئے ہلاکت خیز حملے سے قبل کروڑ ہا روپئے نکسلائیٹس کو منتقل کئے تھے ۔ اس حملے میں کانگریس کے کئی ریاستی قائدین ہلاک ہوگئے تھے ۔ کانگریس نے اس واقعہ کی سی بی آئی تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے اور کہا کہ ریاست میں پولیس اور ماویسٹوں کے مابین تعلقات کی تحقیقات بھی ہونی چاہئیں۔ تاہم بی جے پی نے کانگریس کے ان الزامات کو بے بنیاد قرار دیا ہے ۔ مدھیہ پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر بھوپیش باگھیل نے ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ ہمیں اطلاع ملی ہے کہ جیرام وادی حملہ سے قبل برسر اقتدار بی جے پی نے کسی درمیانی آدمی کے ذریعہ کروڑ ہا روپئے ماؤیسٹوں کو منتقل کئے تھے ۔ 25 مئی 2013 کو نکسلائیٹس نے جیرام وادی میں کانگریس قائدین کے ایک قافلہ پر گھات لگاکر حملہ کیا تھا جس میں کم از کم 31 افراد ہلاک ہوگئے تھے ان میں اس وقت کے کانگریس کے ریاستی صدر نند کمار پٹیل ‘ سابق قائد اپوزیشن مہیندرا کرما ہلاک ہوگئے تھے جبکہ ‘ سینئر کانگریس لیڈر ودیا چرن شکلا زخمی ہوئے تھے اور بعد میں دوران علاج فوت ہوگئے تھے ۔ باگھیل نے کہا کہ پہلے بھی حکومت پر الزامات عائد ہوتے رہے کہ اس نے آئی اے ایس عہدیدار الیکس پال مینن کو ماؤیسٹوں کی قید سے رہا کروانے 2012 میں بھی انہیں رقومات دی گئی تھیں۔ انہوں نے کہا کہ اب تک ان الزامات کی تحقیقات کیلئے کوئی حکم جاری نہیں کیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حالیہ دنوں میں ان کی جیل میں ایک پولیس مخبر ابھئے سنگھ سے ملاقات ہوئی تھی جس کے پاس پولیس اور ماؤیسٹوں کے مابین ساز باز کی اہم ترین اطلاعات ہیں۔ اس شخص نے بائیں بازو کی عسکریت پسندی کو ختم کرنے مہم میں پولیس کے ساتھ کام کیا تھا ۔ جب اس نے پولیس اور ماؤیسٹ ساز باز کو عام کرنے کا ارادہ کیا تھا اس کے خلاف فرضی مقدمات درج کرتے ہوئے اسے جیل بھیج دیا گیا ۔ کانگریس لیڈر نے کہا کہ اس سارے معاملہ کی سی بی آئی تحقیقات کروائی جانی چاہئیں۔ تاہم سینئر بی جے پی لیڈر اور رکن اسمبلی شیو رتن شرما نے ان الزامات کی تردید کی اور انہیں بے بنیاد قرار دیا ہے ۔ مسٹر شرما نے کہا کہ جیرام وادی حملہ کے بعد اس وقت کی مرکز کی یو پی اے حکومت نے اس واقعہ کی قومی تحقیقاتی ایجنسی ( این آئی اے ) کے ذریعہ تحقیقات کا حکم دیا تھا اور ان تحقیقات میں اس طرح کی کوئی بات سامنے نہیں آئی تھی ۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس پارٹی کے پاس ریاستی حکومت کے خلاف اٹھانے چونکہ کوئی سنجیدہ مسئلہ نہیں ہے اس لئے اس مسئلہ کو ہوا دی جا رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی حکومت ریاست میں بائیں بازو کی تخریب کاری کو ختم کرنے کیلئے مسلسل جدوجہد کر رہی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT