Friday , August 18 2017
Home / شہر کی خبریں / چیرمین تلنگانہ جے اے سی کودنڈا رام کا دورہ محبوب نگر

چیرمین تلنگانہ جے اے سی کودنڈا رام کا دورہ محبوب نگر

پالمور لفٹ اریگیشن کا معائنہ ، محبوب نگر کے خشک سالی سے متاثرہ کسانوں سے ملاقات
حیدرآباد ۔ 22 جولائی ( سیاست نیوز ) چیرمن تلنگانہ جوائنٹ ایکشن کمیٹی پروفیسر کودنڈا رام نے یادگار شہیداں گن پارک سے ضلع محبو ب نگر کے سہ روزہ اسٹڈی ٹور کا آغاز کیا اور اپنے دورے کے پہلے اور دوسرے روز ضلع محبو ب نگر میںخشک سالی سے متاثرہ دیہی علاقوں کا دورہ کرتے ہوئے مقامی عوام سے ملاقات کی ۔ کودنڈا رام نے اس دوران پالمور لفٹ اریگیشن کا بھی معائنہ اور مجوزہ آبپاشی پراجکٹ کے سبب زیر آب آنے والے دیہی علاقوں کی عوام سے ملاقات کی ۔ بعدازاں کودانڈرام نے ضلع محبو ب نگر کے دیہات بھوم راج پیٹ، کوڑنگل ، دولت آباد ،گڈی ملکان پلی ، نارائن پیٹ ، اتکور، کولہاپور،  نارلا پور ، جونالا بو گوڑہ ، ناگر کرنول ، دونڈہ پور ، کی عوام سے ملاقات کرتے ہوئے مذکورہ مقامات پر خشک سالی سے متاثرہ کسانوں سے ملاقات کی ۔ اس کے علاوہ چیرمن تلنگانہ جوائنٹ ایکشن کمیٹی پروفیسر کودنڈارام نے ضلع محبو ب نگر کے پالمور لفٹ اریگیشن کی زد میں آنے والے کسانوں سے ملاقات کرکے تفصیلات حاصل کئے ۔ تلنگانہ جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے اس اسٹڈی ٹور کے دوران کودنڈا رام نے مذکورہ دیہی علاقوں میں واقع تالابوں کابھی مشاہدہ کیا اور بھوم راج پیٹ تالاب میں پالمور پراجکٹ کے تحت پانی کی سینچائی کے طریقہ کار کابھی جائزہ لیا ۔ اس موقع پر کودنڈا رام نے کہاکہ مقامی عوام کے مطابق بھوم راج پیٹ تالاب کو سیراب کرنے کیلئے پالمور لفٹ اریگیشن سے پانی کی سینچائی عمل میں لائی جاسکتی ہے مگر حکومت تلنگانہ اس جانب توجہ مرکوز نہیںکر رہی ہے ۔ کودنڈا رام نے کہا کہ یہی حال کوڑنگل دولت آباد تالاب کا بھی ہے جو پچھلے دس سالوں سے خشک سالی کا شکار ہے مگر یہاں پر پالمور لفٹ اریگیشن کے ذریعہ پانی کی سینچائی کا حکومت کی جانب سے منصوبہ بنایا جارہا ہے جبکہ حکومت کا یہ اقدام کوڑنگل دولت آباد تالاب کو سیراب کرنے کیلئے موثر ثابت نہیں ہوگا ۔ کودنڈا رام نے پالمور کے بجائے کرشنا ندی سے پانی کی سینچائی عمل میں لاتے ہوئے مذکورہ تالا ب کوسیراب کیا جاسکتا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ مقامی عوام بالخصوص خشک سالی سے متاثرہ کسانوں کے مطابق کرشناندی سے کوڑنگل دولت آباد تالاب کو پانی کی فراہمی حکومت تلنگانہ کیلئے آسان ہوگا ۔ کودنڈا رام نے بتایا کہ یہی حال نارائن پیٹ اور اتکور کا ہے جہاں پر لفٹ اریگیشن کی وجہہ سے کئی گائوں زیر آب آنے کا خدشہ ہے ۔ انہوں نے کہاکہ اسٹیڈی ٹور کے دوسرے دن ہم نے کوڑنگل ‘ اتکور کے متاثرین سے ملاقات کی ۔ کودنڈا رام نے کہاکہ مقامی عوام کے مطابق عوامی نمائندے متاثرہ علاقوں کی موثر نمائندگی میں ناکام ہوچکے ہیں ۔ کودنڈا رام نے کہاکہ نارائن پیٹ اتکور میں آبپاشی پراجکٹ کے نام پر کسانوں اور مقامی عوام سے زمین خریدی جارہی ہے مگر مقامی عوام کے مطابق رقومات کی ادائی میںحکومت کوتاہی برت  رہی ہے ۔ کودنڈا رام نے مزیدکہا کہ پالمور رنگا ریڈی لفٹ اریگیشن کے تعمیراتی کاموں کے آغاز کیلئے کنٹراکٹرس کوہدایت دی گئی ہے مگر کنٹراکٹرس پراجکٹ کیلئے کسانوں سے حاصل کی گئی اراضیات کا معاوضہ ادا کرنے میںغیر سنجیدہ ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ پالمور رنگاریڈی لفٹ اریگیشن کے بجائے نارائن پیٹ اتکور کو سری سلیم ڈیم سے پانی فراہم کیا جاسکتا ہے جس کی لاگت کیلئے حکومت پر کم خرچ ائے گا ۔ کودنڈا رام نے پراجکٹ کے نام پر حاصل کی جانے والی اراضیات پر معاوضہ کی عاجلانہ ادائی کا بھی حکومت تلنگانہ سے مطالبہ کیا ۔ پروفیسر ہرا گوپال‘ پی رویندرا ‘ ایڈوکیٹ جے اے سی پرہلاد، پروفیسر پرشتم ریڈی‘ ڈی پی ریڈی‘ پربھاکر ریڈی‘ راجندرا ریڈی کے علاوہ دیگر بھی موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT