Tuesday , June 27 2017
Home / شہر کی خبریں / چیف منسٹر احتجاج کے حق کو سلب کر رہے ہیں

چیف منسٹر احتجاج کے حق کو سلب کر رہے ہیں

اندرا پارک پر احتجاج سے روکنے کی مذمت ‘ ڈاکٹر کے نارائنا
حیدرآباد 9 مارچ (سیاست نیوز) قومی سکریٹری سی پی آئی ڈاکٹر کے نارائنا نے چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ پر الزام عائد کیا کہ وہ تلنگانہ عوام کے حقوق کو سلب کررہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر کی ہدایت پر ہی اندرا پارک کے پاس احتجاج کرنے اور بھوک ہڑتالی کیمپ چلانے پر پابندی عائد کردی گئی ہے جبکہ سابق حکومتوں کی جانب سے عوام کو احتجاج کرنے اور بھوک ہڑتال کا موقع فراہم کرنے کے مقصد سے اندرا پارک کے مقام کا تعین کیا گیا تھا لیکن موجودہ چیف منسٹر اپنے آپ کو جہد کار قرار دیتے ہیں، عوام کو احتجاج کرنے سے باز رکھنے اور اپنے حقوق کے مطالبہ پر بھوک ہڑتال کرنے سے پولیس کی مدد کے ذریعہ رکاوٹیں پیدا کررہے ہیں۔ ڈاکٹر نارائنا نے چیف منسٹر کے آمرانہ طرز عمل کو ہدف ملامت بنایا اور کہا کہ گزشتہ ماہ 22 فروری کو صدرنشین تلنگانہ پولیٹیکل جوائنٹ ایکشن کمیٹی پروفیسر کودنڈا رام اور دیگر بیروزگار نوجوانوں کی ریالی جمہوری انداز میں نکالنے کی کوشش کرنے پر انہیں نہ احتجاج کرنے کا موقع فراہم کیا گیا اور نہ بھوک ہڑتال کرنے کی اجازت دی گئی بلکہ پولیس کے ذریعہ اجازت دینے سے انکار کروایا گیا اور جنہوں نے احتجاج کرنے کی کوشش کی تھی ان تمام قائدین کو گرفتار کیا گیا ۔ حصول تلنگانہ کیلئے تلنگانہ پولیٹیکل جوائنٹ ایکشن کمیٹی نے انتہائی اہم رول ادا کیا تھا۔ ڈاکٹر نارائنا نے چیف منسٹر کو یاد دلایا کہ مختلف موقعوں پر احتجاج منظم کرنے پر علیحدہ تلنگانہ کا حصول ممکن ہوسکا اور آج جب وہ چیف منسٹر بن گئے ہیں تو، احتجاج کو برداشت نہیں کررہے ہیں۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ چیف منسٹر نے ریاست میں بیروزگاری کو کم کرنے ابھی ہنوز کوئی موثر اقدامات نہیں کئے اور بڑھتی ہوئی بیروزگاری کو ختم کرنے کی بجائے جدوجہد کرنے والوں کو روکا جارہا ہے ۔ محض حکومت کی بے قاعدگیوں کی پردہ پوشی کیلئے چندر شیکھر راؤ اس طرح کے ہتھکنڈے استعمال کررہے ہیں۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT