Saturday , September 23 2017
Home / شہر کی خبریں / چیف منسٹر اور ان کے ارکان خاندان پر الزام تراشی ناقابل برداشت

چیف منسٹر اور ان کے ارکان خاندان پر الزام تراشی ناقابل برداشت

کانگریس قائدین کو سخت انتباہ ، ٹی آر ایس ایم ایل سی اے پربھاکر کا ردعمل
حیدرآباد۔4 اگست (سیاست نیوز) ٹی آر ایس کے رکن قانون ساز کونسل اے پربھاکر نے چیف منسٹر اور ان کے ارکان خاندان کے خلاف کانگریس کی الزام تراشی کی مذمت کرتے ہوئے انتباہ دیا کہ اس طرح کی مزید الزام تراشی کو پارٹی برداشت نہیں کرے گی۔ میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے پربھاکر نے صدر پردیش کانگریس اور دیگر قائدین کی جانب سے چیف منسٹر کے سی آر اور وزیر انفارمیشن ٹیکنالوجی کے ٹی آر کو نشانہ بنانے پر شدید ردعمل کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس انتہائی نچلی سطح کی سیاست کررہی ہے اور حقائق کے بغیر الزام تراشی کے ذریعہ سیاسی مقصد براری اس کا عین مقصد ہے۔ انہوں نے کہا کہ کسی بھی مسئلہ پر بنیادی معلومات کے بغیر ہی کانگریس قائدین اظہار خیال کررہے ہیں جو انتہائی افسوسناک ہے۔ انہوں نے کہا کہ انہوں نے کانگریس پارٹی کو تلنگانہ کی ترقی میں اہم رکاوٹ قرار دیا اور کہا کہ اگر کانگریس قائدین اپنے رویہ میں تبدیلی نہیں لائیں گے تو ٹی آر ایس اسی انداز میں جواب دینے کی اہل ہے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس کی سرگرمیاں اور بیان بازی سے پارٹی کیڈر میں بے چینی پائی جاتی ہے اور وہ کانگریس قائدین کو مناسب سبق سکھائیں گے۔ پربھاکر نے کہا کہ گزشتہ تین برسوں میں تلنگانہ کی ریکارڈ ترقی ہوئی ہے جس کا سہرا چیف منسٹر کے سی آر کے سر جاتا ہے۔ ترقی کی راہ میں مقدمات کے ذریعہ رکاوٹ پیدا کرنے کی کوشش کی گئی۔ ہائی کورٹ میں کئی مقدمات زیر دوران ہیں اور پراجیکٹس کی تعمیر موقوف ہوچکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس کی مخالف تلنگانہ پالیسی کے سبب پراجیکٹس کی مالیت میں اضافہ ہورہا ہے جو سرکاری خزانے پر بوجھ ہے۔ انہوں نے اپوزیشن پر چیف منسٹر کی برہمی کو جائز قرار دیا اور کہا کہ سنہرے تلنگانہ کی تشکیل میں رکاوٹ پیدا کرنے والوں پر ناراضگی بجا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ چیف منسٹر نے کانگریس کو تلنگانہ کے درشمن نمبر ایک قرار دیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس قائدین کو چاہئے کہ وہ زبان قابو میں رکھ کر بات کریں یا پھر نتائج کا انتظار کریں۔ پربھاکر نے کہا کہ کانگریس قائدین کو دراصل شکست کا خوف کھائے جارہا ہے اور وہ 2019ء میں اپنی شکست کو یقینی دیکھ رہے ہیں۔ دوبارہ اقتدار کے لیے وہ نچلی سیاست کو اختیار کرچکے ہیں۔ پربھاکر نے کہا کہ آئندہ انتخابات میں بھی ٹی آر ایس کی کامیابی یقینی ہے۔ اقتدار کی لالچ نے کانگریس قائدین کو ذہنی طور پر دیوالہ پن سے دوچار کردیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سرسلہ میں پیش آئے بعض واقعات کو دلتوں پر مظالم کی حیثیت سے پیش کرنے کی کوشش کی گئی اور دلتوں کے نام پر کانگریس نے سیاست کی ہے۔ پربھاکر نے کہا کہ جس پارٹی نے اپنے دور حکومت میں دلتوں پر مظالم ڈھائے تھے آج وہی پارٹی ہمدردی میں مگرمچھ کے آنسو بہارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس قائدین کو چاہئے کہ حکومت اور چیف منسٹر پر الزام تراشی سے قبل خود اپنا محاسبہ کرے۔

TOPPOPULARRECENT