Friday , August 18 2017
Home / شہر کی خبریں / چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر پر عوامی برہمی کا خوف

چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر پر عوامی برہمی کا خوف

بیڈروم و ٹائلیٹ بلٹ پروف بنانے پر مجبور ، محمد علی شبیر کا الزام
حیدرآباد /23 نومبر ( سیاست نیوز ) قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل محمد علی شبیر نے کہا کہ عوامی برہمی کے خوف کے باعث چیف منسٹر کے سی آر بیڈروم اور ٹائلیٹ بھی بلٹ پروف بنانے پر مجبور ہوگئے کیونکہ عوام اس وقت کرنسی بحران سے دوچار ہیں چیف منسٹر نئے گھر منتقل ہونے کا جشن منارہے ہیں ۔ عوامی زندگی میں واستو پر ایقان سیکولرازم کے منافی ہے ۔ لہذا گورنر نرسمہن کو چاہئے کہ وہ  جشن تقریب میں شرکت کرنے سے گریز کریں ۔ آج اسمبلی کے میڈیا کانفرنس ہال میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے محمد علی شبیر نے کہا کہ ریاست میں عوام کرنسی بحران کا شکار ہے اور وزیر اعظم نریندر مودی سے ملاقات کے بعد عوامی مسائل کو نظر انداز کرتے ہوئے کے سی ار جشن منارہے ہیں ۔ وعدوںکی عدم تکمیل سے عوام میں پائی جانے والی ناراضگی کو دیکھتے ہوئے چیف منسٹر اپنے بیڈروم اور بیت الخلاء کو بھی بلٹ پروف بنادیا ہے ۔ واستو کے نام پر سرکاری خزانے سے 38 کروڑ روپئے کا لکژری مکان تعمیر کیا جارہا ہے جو جمہوری اوصولوں کے مغائر ہے ۔ چیف منسٹر پہلے طلبہ کی فیس بازادائیگی پر عمل ، کسانوں کو سبسیڈی کی اجرائی اور غریب عوام کیلئے ڈبل بیڈروم مکانات تعمیر کریں ۔ کے سی آر نے شہری علاقوں میں ایک لاکھ اور دیہی علاقوں میں 1.6 لاکھ جملہ 2.6 لاکھ ڈبل بیڈروم مکانات تعمیر کرنے کا وعدہ کرتے ہوئے اقتدار حاصل کیا تھا ۔ اس کو نظر انداز کرتے ہوئے خود فائی اسٹار بنگلہ میں منتقل ہو رہے ہیں ۔ محمد علی شبیر نے کرنسی بحران کے دوران عوامی مسائل کو نظر انداز کرتے ہوئے اپنی گھر بھراؤنی کو ترجیح دینے کی سخت مذمت کیا۔ چیف منسٹر تلنگانہ نے 9 ایکر اراضی پر عالیشان بنگلہ تعمیر کرتے ہوئے غریب عوام کی غریبی کا مذاق اڑایا ہے ۔ راج شیکھر ریڈی نے دیڑھ ایکر اراضی پر 10 کروڑ روپئے کے مصارف سے چیف منسٹر کی قیام گاہ اور کیمپ آفس تعمیر کی تھی جس کو بحیثیت چیف منسٹرس روشیا اور کرن کمار ریڈی نے بھی استعمال کیا تھا قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل نے گورنر نرسمہن سے اپیل کی کہ وہ اس تقریب میں شرکت کرنے سے احتراز کریں ۔ جمہوریت میں واستو پر ایقان سیکولرازم کی خلاف ورزی ہے ۔ جس سے عوام میں غلط پیغام پہونچتا ہے ۔ کے سی آر پہلے غریب عوام کی فلاح و بہبود اور ان کی ترقی پر غور کریں ۔ ان کے مسائل کو حل کرنے کیلئے سنجیدہ کام کریں ۔ عوامی مسائل کو نظر انداز کرنا اور اپنی پر تعیش زندگی کو ترجیحی دینا جمہوری اقدار کی خلاف ورزی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT