Saturday , August 19 2017
Home / شہر کی خبریں / چیف منسٹر تلنگانہ کے چندر شیکھر راؤ خود غرض

چیف منسٹر تلنگانہ کے چندر شیکھر راؤ خود غرض

وزیر اعظم نریندر مودی سے خفیہ معاہدہ کا الزام ، ایس جئے پال ریڈی
حیدرآباد ۔ 2 ۔ جون : ( سیاست نیوز ) : سابق مرکزی وزیر مسٹر ایس جئے پال ریڈی نے چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر کو خود غرض قرار دیتے ہوئے نریندر مودی سے خفیہ معاہدہ کرنے اقلیتوں کی امکانی ناراضگی کو مد نظر رکھتے ہوئے اس کو پس پردہ رکھنے کا الزام عائد کیا ۔ علحدہ تلنگانہ ریاست کی تشکیل کے لیے کانگریس کی صدر مسز سونیا گاندھی اور مرکزی کابینہ کو راضی کرانے میں اہم رول ادا کرنے والے سابق مرکزی وزیر مسٹر ایس جئے پال ریڈی نے کے سی آر کو خود غرض اور مفاد پرست قرار دیتے ہوئے کہا کہ نمس میں چیف منسٹر تلنگانہ نے فرضی مرن برتھ رکھا تھا ۔ انہیں ڈاکٹرس کی جانب سے روزانہ 750 کیلرس پر مشتمل نیوٹریشن دیا جارہا تھا ۔ نمس ہاسپٹل کے ریکارڈ میں تحقیقات کرنے پر ریکارڈ دستیاب ہونے کا دعوی کیا ۔ سابق مرکزی وزیر نے چیف منسٹر تلنگانہ پر سرکاری اختیارات کا بیجا استعمال کرنے کا الزام عائد کیا ۔ انہوں نے کے سی آر کو اچھے سیاسی تاجر قرار دیتے ہوئے کہا کہ جب علحدہ تلنگانہ ریاست حاصل کرنا تھا تب انہوں نے صدر کانگریس مسز سونیا گاندھی کی تعریف کی ہے ۔ اب مودی کے اطراف و اکناف گھوم رہے ہیں ۔ مسٹر ایس جئے پال ریڈی نے وزیراعظم نریندر مودی کو مخالف تلنگانہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ سیاسی مفادات کی تکمیل کے لیے کے سی آر نے مودی سے خفیہ سازباز کی ہے اور سیکولر نظریات ہونے کا صرف ناٹک کیا جارہا ہے ۔ اقلیتوں کی ناراضگی کو مد نظر رکھتے ہوئے خفیہ معاہدے کو راز میں رکھا گیا ہے ۔ نریندر مودی سے مل کر کام کرنے کی صورت میں اقلیتیں بالخصوص مسلمان ٹی آر ایس سے دور ہوجائیں گے ۔ اس لیے دوریاں برقرار رکھتے ہوئے اقلیتوں کو دھوکہ دیا جارہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ کے نوجوانوں طلبہ سرکاری ایمپلائز کے احتجاج قربانیاں اور جذبات سے متاثر ہو کر صدر کانگریس مسز سونیا گاندھی نے پڑوسی ریاست آندھرا پردیش میں کانگریس کے نقصان کو برداشت کرتے ہوئے علحدہ تلنگانہ ریاست تشکیل دی ہے تاہم اس کا فائدہ نہ کانگریس کو ہوا اور نہ ہی تلنگانہ کے عوام کو ہوا ہے ۔ صرف کے سی آر کے ارکان خاندان کو ہی فائدہ ہوا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT