Monday , July 24 2017
Home / شہر کی خبریں / چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ ، وزیر اعظم سے ملاقات کے منتظر

چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ ، وزیر اعظم سے ملاقات کے منتظر

مسلم تحفظات میں اضافہ اور ریاست کے دیگر امور سے متعلق منظوری حاصل کرنے کی کوشش
حیدرآباد۔/22اپریل، ( سیاست نیوز) چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ تلنگانہ سے متعلق بعض اہم مسائل کی یکسوئی کیلئے وزیراعظم نریندر مودی سے ملاقات کے منتظر ہیں۔ مسلمانوں اور درج فہرست قبائیل کے تحفظات میں اضافہ سے متعلق بل کی منظوری کے علاوہ درج فہرست اقوام کی از سر نو زمرہ بندی جیسے اُمور پر چیف منسٹر چاہتے ہیں کہ وزیر اعظم کو ریاست کی صورتحال سے واقف کراتے ہوئے مرکز کی منظوری حاصل کریں۔ باوثوق ذرائع نے بتایا کہ چیف منسٹر کل اتوار کو نئی دہلی میں نیتی آیوگ کے اجلاس میں شرکت کریں گے جس میں تمام ریاستوں کے چیف منسٹرس کی شرکت متوقع ہے۔ نیتی آیوگ کے صدرنشین کی حیثیت سے وزیر اعظم نریندر مودی کا خطاب ہوگا۔ بتایا جاتا ہے کہ اجلاس کے بعد کے سی آر نے وزیر اعظم نریندر مودی سے ملاقات کا وقت مانگا ہے۔ تقریباً 19 مطالبات کی فہرست کے ساتھ کے سی آر نئی دہلی روانہ ہوئے ہیں جن میں سرفہرست مسلم اور درج فہرست اقوام کے تحفظات کا مسئلہ ہے۔ اسمبلی اور کونسل کے حالیہ اجلاس میں اس بل کو منظوری دی گئی تھی۔ تلنگانہ حکومت نے اراضی کے حصول سے متعلق قانون کو منظوری دیتے ہوئے مرکز کو روانہ کیا۔ اس کے علاوہ ایس سی زمرہ بندی کے بارے میں قرارداد منظور کی گئی۔ ان دونوں اُمور کو مرکز کی منظوری ابھی باقی ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ چیف منسٹر کالیشورم اور پالمورو پراجکٹس کیلئے جنگلاتی اور ماحولیاتی منظوری کیلئے وزیر اعظم سے نمائندگی کریں گے۔ کالیشورم پراجکٹ کو قومی پراجکٹ کا درجہ دینے کی خواہش کی جائے گی تاکہ پراجکٹ کے اخراجات میں مرکز سے فراخدلانہ تعاون حاصل ہوسکے۔ مرکزی حکومت کی ضمانت روزگار اسکیم کو زراعت سے مربوط کرنے اور کسانوں کی آمدنی میں اضافہ کیلئے بھی چیف منسٹر چاہتے ہیں کہ وزیر اعظم سے بات چیت کی جائے۔ پراجکٹس کی راہ میں اہم رکاوٹ اراضی کا حصول ہے۔ اس سلسلہ میں ریاستی حکومت کو زائد اختیارات کے سلسلہ میں بل کو منظوری دی گئی تھی۔ یہ بل مرکز کی منظوری کا منتظر ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ ریاست میں اقامتی اسکولس کے قیام اور کے جی تا پی جی مفت تعلیم کی اسکیم پر عمل آوری کیلئے مرکز سے تعاون کی خواہش کی جائے گی۔ وزیر اعظم سے جن دیگر اسکیمات کے بارے میں بات چیت کی جاسکتی ہے ان میں پردھان منتری کرشی یوجنا، پردھان منتری فصل بیمہ یوجنا اور کیاش لیس معاملت شامل ہیں۔ وزیر اعظم سے ملاقات سے قبل برسر اقتدار ٹی آر ایس نے بی جے پی کے بارے میں اپنا رُخ نرم کرلیا ہے۔ کل منعقدہ پارٹی کے پلینری سیشن میں چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ اور ٹی آر ایس کے دیگر قائدین نے اپنی تقاریر میں کانگریس اور تلگودیشم پر شدید تنقید کی لیکن بی جے پی پرتنقید سے گریز کیا گیا۔ بتایا جاتا ہے کہ وزیر اعظم سے ملاقات سے قبل حکمت عملی کے تحت ہی بی جے پی کو نشانہ نہیں بنایا گیا۔ پلینری سیشن میں چیف منسٹر نے مسلمانوں اور درج فہرست قبائیل کے تحفظات کے مسئلہ کو بھی نہیں چھیڑا کیونکہ اگر یہ مسئلہ زیر بحث آتا توبی جے پی پر تنقید کرنا پڑتا۔ ٹی آر ایس کے ذرائع کا کہنا ہے کہ چیف منسٹر ریاست کے مطالبات پر وزیر اعظم سے مثبت ردعمل کے بارے میں پُرامید ہیں۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT