Tuesday , September 26 2017
Home / اضلاع کی خبریں / چیف منسٹر کی من مانی سے خزانہ خالی

چیف منسٹر کی من مانی سے خزانہ خالی

مرکزی حکومت پر بھی تنقید، ورنگل میں چاڈا وینکٹ ریڈی کا خطاب

ورنگل۔/9نومبر، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) اضلاع کی تشکیل جدید کے نام پر ریاستی چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے اضلاع کو ایسے توڑ دیا جیسے کتے کپڑے پھاڑتے ہیں من مانی طریقہ سے اضلاع کو توڑ دیا۔ ان خیالات کا اظہار سی پی آئی اسٹیٹ سکریٹری چاڈا وینکٹ ریڈی نے تورور منڈل میں منعقدہ سی پی آئی پارٹی مہا سبھا سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ سیاسی مفادات کیلئے سی ایم نے اضلاع کی تشکیل جدید کی۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں سنہرا تلنگانہ نہیں جینے کا تلنگانہ چاہیئے۔ آج ریاست کے بجٹ کو خسارہ میں تبدیل کردیا گیا۔ اس وقت معاشی طور پر تلنگانہ ریاست کمزور ہوچکی ہے۔ خزانہ خالی ہے اور چیف منسٹر دماغی کھیل کھیلتے ہوئے عوام کے جذبات سے کھیل رہے ہیں۔ انہوں نے مرکزی حکومت پر بھی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی حکومت میں عوام پریشان حال ہیں ملک میں مسلم اقلیت، دلت، آدی واسیوں اور دیگر پسماندہ طبقات پر روزانہ ظلم ہورہا ہے مرکزی  بی جے پی حکومت، وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت میں آر ایس ایس کے اشاروں پر کام کررہی ہے۔ نریندر مودی کارپوریٹ گھرانوں کو خوش کرنے میں لگے ہوئے ہیں۔ آج ملک انتہائی نازک دور سے گذررہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ کی عوام کو فاشسٹ طاقتوں سے لڑنے کی ضرورت ہے اور چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کی تانا شاہی بہت ہوچکی ہے ملک اور ریاست کی عوام کو معلوم ہورہا ہے کہ یہ کیسے لوگ ہیں۔ عوام آئندہ انتخابات میں ان پارٹیوں کو ضرور سبق سکھائیں گے ۔ اس موقع پر سابق ایم ایل اے سامبا شیوا راؤ، سی ایچ راجندر ریڈی ، ساریا، لکشمی، جیوتی، بھکشا پتی و دیگر قائدین نے بھی مخاطب کیا۔

TOPPOPULARRECENT