Wednesday , May 24 2017
Home / شہر کی خبریں / چیف منسٹر کے سی آر کا وعدہ پورا ہوگیا، ترقی کے دروازوں کی کشادگی

چیف منسٹر کے سی آر کا وعدہ پورا ہوگیا، ترقی کے دروازوں کی کشادگی

تحفظات بل کی منظوری خوش آئند، الحاج محمد سلیم ایم ایل سی و چیرمین وقف بورڈ کا بیان
حیدرآباد۔16اپریل (سیاست نیوز) حکومت تلنگانہ نے ریاست کے مسلمانوں کے لئے 12فیصد تحفظات کی فراہمی کے بل کو منظور کرتے ہوئے ہندستان میں مسلمانوں کی موجودہ حالت کو دور کرنے میں اہم پیشرفت کی ہے۔ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے ریاست کے مسلمانوں سے تحریک تلنگانہ کے دوران کئے گئے وعدہ کو پورا کرتے ہوئے تلنگانہ میں تحفظات بل کو منظور کرواتے ہوئے مسلم نوجوانوں کی ترقی کے دروازے کھول دیئے ہیں ۔ جناب الحاج محمد سلیم صدرنشین تلنگانہ ریاستی وقف بورڈ و رکن قانون سازکونسل نے ریاست کے دونوں ایوانوں میں تحفظات میں اضافہ کے بل کو منظوری پر ریاست کے عوام کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ ریاست میں جس کسی شخص نے چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کی تائید کی ہے وہ آج فخریہ یہ کہہ رہا ہے کہ چیف منسٹر جو کہتے ہیں وہ کر دکھاتے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ ریسات تلنگانہ میں جس طرح حکومت نے مسلمانو ںکو کی ترقی و فلاح و بہبود کیلئے اقدامات و فیصلہ کئے ہیں اس کی نظیر ملک کی کسی ریاست میں نہیں ملتی اورنہ ہی کوئی قائد اتنی جرأت مندی کے ساتھ اتنا بڑا فیصلہ کرنے کا متحمل ہوسکتا ہے۔جناب الحاج محمد سلیم نے کہا کہ ریاستی حکومت بالخصوص حکومت کی جانب سے یہ کہا جانا کہ حکومت نے مسلمانوں پر کوئی احسان نہیں کیا بلکہ ریاست میں مسلمانوں کی حالت دیکھتے ہوئے اس میں سدھار لانے تحفظات کو ضروری سمجھا گیا ہے حکومت کے نظریہ کو واضح کرتا ہے۔ صدرنشین وقف بورڈ نے بتایا کہ کے سی آر نے تحریک تلنگانہ کے دوران جو وعدے کئے ان کو عملی جامہ پہنارہے ہیں اوران کے اس اقدام پر شبہات کرنے کے بجائے اب ان کا ساتھ دیتے ہوئے تحفظات کی فراہمی کو یقینی بنانے کیلئے جدوجہد کرنی چاہئے۔ جناب الحاج محمد سلیم نے کہا کہ ریاست تلنگانہ میں تحفظات کی فراہمی کے بعد ملک کی دیگر ریاستو ںمیں بھی مسلمانو ںکا شعور اجاگر ہوگا اور وہ تلنگانہ کے طرز پر تحفظات کے حصول کیلئے کوششوں کا آغاز کریں گے۔رکن قانون ساز کونسل ٹی آر ایس نے کہا کہ متحدہ ریاست آندھرا پردیش میں مسلمانو ںکو4فیصد تحفظات کی فراہمی کے عمل کا آغاز ہوا تھا اور آج چیف منسٹر تلنگانہ مسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے اس میں 200 فیصد کا اضافہ کرتے ہوئے یہ ثابت کردیا کہ پسماندہ اور محروم طبقات کی ترقی کیلئے ان کی فراخدلی کا کوئی مقابلہ نہیں کرسکتا ۔ انہوں نے ریاستی کابینہ اور اسمبلی و قانون ساز کونسل میں موجود ان تمام سیاسی جماعتوں کے ارکان اسمبلی و قانون ساز کونسل سے اظہا تشکر کیا جنہوں نے اپنے ہم وطنوں کی ترقی میں تحفظات کی ضرورت کو محسوس کرتے ہوئے مسلم تحفظات کے بل کو منظور کرنے میں کلیدی کردار ادا کیا۔ جناب الحاج محمد سلیم نے بتایا کہ ریاست تلنگانہ میں 12فیصد مسلم تحفظات سے ریاست میں مسلمانوں کی مجموعی ترقی ہوگی اور اس ترقی کے فوائد ریاست کو بھی حاصل ہوں گے۔انہوں نے کہا کہ جس طرح ریاستی حکومت نے تحفظات کی فراہمی کے معاملہ میں اپنے انتخابی وعدہ کو پورا کیا ہے اسی طرح ریاست میں موجو داوقافی جائیدادوں کے تحفظ اور ان کے صحیح استعمال کے لئے بھی بہت جلد اقدامات کئے جائیں گے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT