Friday , August 18 2017
Home / کھیل کی خبریں / چیلنجس سے نمٹنے کی خواہش کوہلی کے اِستقلال کی بنیاد

چیلنجس سے نمٹنے کی خواہش کوہلی کے اِستقلال کی بنیاد

اسٹار بلے باز کی زبردست ستائش ، سریش رائنا کی شمولیت کی مدافعت ، کپتان دھونی کا میچ کے بعد اظہار ِخیال
کولکتہ۔ 20 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) روایتی حریف ٹیم پاکستان کے خلاف ایک اور شاندار کامیابی دلانے کا کپتان مہیندر سنگھ دھونی نے اسٹائلش بلے باز ویراٹ کوہلی کی زبردست ستائش کی ہے۔ دھونی نے کہا کہ بہتر سے بہتر کارکردگی دکھانے کا جنون اور چیلنجس کا سامنا کرنے کی خواہش ویراٹ کوہلی کے پُراستقلال مظاہرہ کی بنیاد ہے۔ دھونی نے میچ کے بعد پریس کانفرنس میں کہا کہ کوہلی کی سب سے اہم بات یہ ہے کہ وہ ہر چیز کو چیلنج کے طور پر لیتے ہیں۔ اپنی کارکردگی کو بہتر بنانا چاہتے ہیں۔ ہر میچ میں اپنا رول ادا کرنا چاہتے ہیں۔ وہ ہر میچ میں اسکور کرنا چاہتے ہیں۔ انہیں کارکردگی دکھانے کا جنون ہے۔ وہ چیلنجس کا سامنا کرنے کا جذبہ رکھتے ہیں۔ یہی چیز انہیں سب سے منفرد اور مخصوص بناتی ہے۔ کوہلی نے پاکستان کے خلاف کل رات ہوئے میچ میں 37 گیندوں میں 55 رنز اسکور کرتے ہوئے ایڈن گارڈنس پر اپنی ٹیم کو یادگار کامیابی دلائی ہے۔ دھونی نے کوہلی کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ وہ خود اپنے آپ کو تیار کرتے ہیں۔ اپنی فٹنس برقرار رکھتے ہوئے وہ خود سمجھتے ہیں کہ انہیں مختلف حالات میں کس طرح بیٹنگ کرنی چاہئے اور ہم سب یہ بات جانتے ہیں کہ کوہلی جب کبھی شروعات اچھی کرلیں تو ایک بڑی اننگز کو یقینی بناتے ہیں اور یہی بات کسی بھی بلے باز کیلئے بہت اہمیت کی حامل ہے۔ دھونی نے دباؤ سے نمٹنے میں بھی کوہلی کی ستائش کی اور کہا کہ جب کبھی بہت زیادہ دباؤ ہوتا ہے، اکثر لوگ کسی بڑے شاٹ کی کوشش کرتے ہیں۔

وہ سمجھتے ہیں کہ فی الحال یہی ایک طریقہ ہے، لیکن دباؤ سے نمٹنے کا صحیح طریقہ یہ ہے کہ آپ سنگلز لیں اور دوسری جانب چلے جائیں۔ اس سے آپ کو اپنے آپ کو سنبھالنے کا موقع ملتا ہے اور آپ مثبت سوچ اختیار کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ویراٹ کوہلی یہی طریقہ اختیار کرتے ہیں۔ یہی بات انہیں دوسروں سے بہتر بناتی ہے۔ وہ صحیح وقت پر صحیح شاٹ کھیلتے ہیں۔ ویراٹ کوہلی وکٹوں کے درمیان دوڑ بھی بہترین ہے۔ جو لوگ بہترین دوڑ رکھتے ہیں، وہ اسکور بھی آسانی سے کرسکتے ہیں۔ اچھی دوڑ سے مخالف ٹیم پر دباؤ بھی ڈالا جاسکتا ہے۔ دھونی نے ناقص فام کا شکار سریش رائنا کی مدافعت کی۔ انہوں نے کہا کہ مشکل حالات میں کھلاڑیوں کی حوصلہ افزائی کی جانی چاہئے۔ انہوں نے ٹورنمنٹ کے ابتدائی میچ میں نیوزی لینڈ کے خلاف شکست کے بعد شاندار واپسی پر کھلاڑیوں کی ستائش کی۔ انہوں نے کہا کہ اس سے ہمارے کھلاڑیوں کی صلاحیتوں کا پتہ چلتا ہے۔ ہندوستان ایک تجربہ کار ٹیم ہے اور ایسی صورتحال سے نمٹنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔ کپتان دھونی نے کہا کہ شاندار کامیابی کے باوجود وہ سمجھتے ہیں کہ آئندہ دو میچس میں ٹیم کو مزید بہتری کی ضرورت ہے۔ ہمارا رن ریٹ متاثر ہوا ہے ایسے میں آئندہ دو میچس اہمیت کے حامل ہیں۔ یہ صرف جیت کی بات نہیں ہے بلکہ ہمیں رن ریٹ بھی بہتر بنانا ہے۔ پاکستان کے خلاف ورلڈ کپ کے تمام میچس میں کامیابی کے ہندوستانی ریکارڈس کے تعلق سے دھونی نے کہا کہ یہ قابل فخر بات ہے، تاہم کسی دن کامیابیوں کا سلسلہ رُک جائے گا۔ یہ کھیل ہے اور ایسا کچھ بھی ہوسکتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT