Saturday , August 19 2017
Home / Top Stories / چینی جنگی طیاروں نے امریکی جاسوس طیارہ کو واپسی پر مجبور کردیا

چینی جنگی طیاروں نے امریکی جاسوس طیارہ کو واپسی پر مجبور کردیا

واشنگٹن ۔ 25 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) امریکی اہلکاروں نے خبر دی ہے کہ دو چینی جنگی جہازوں نے مشرقی چین کے سمندر میں امریکی بحریہ کے ایک جاسوس طیارے کو علاقے سے نکلنے پر مجبور کر دیا۔خبر رساں ایجنسی رائیٹر نے اطلاع دی ہے کہ اس کارروائی کے دوران چین کا ایک جنگی جہاز امریکی بحریہ کے جہاز سے محض 300 فٹ (91 میٹر) کے فاصلے تک پہنچ گیا تھا۔دو امریکی اہلکاروں نے رائیٹرز کو بتایا کہ چینی جنگی جہاز J-10 اتوار کے روز امریکہ کے جہاز EP-3 کے انتہائی قریب پہنچ گیا تھا جس کے باعث امریکی جہاز فوری طور پر اپنا رْخ تبدیل کر نے پر مجبور ہو گیا۔ امریکی اہلکاروں نے یہ بات شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتائی کیونکہ اْنہیں ایسی اطلاعات پبلک کو فراہم کرنے کا اختیار نہیں تھا۔ایک اہلکار نے بتایا کہ چینی جہاز ہتھیاروں سے لیس تھے اور یہ واقعہ چین کے شہر کنگ داؤ سے 80 ناٹیکل میل دور پیش آیا۔اتوار کو پیش آنے والا یہ واقعہ اپنی نوعیت کا واحد واقعہ نہیں ہے اور ماضی میں بھی ایسے واقعات ہوتے رہے ہیں۔ گزشتہ مئی میں بھی چین کے مشرقی سمندر میں چین کے SU-30 جہاز نے ایک امریکی جاسوس طیاروں کو راستہ بدلنے پر مجبور کر دیا تھا جو بین الاقوامی فضا میں تابکاری کے اثرات کا جائزہ لے رہا تھا۔

واشنگٹن کو بیجنگ کی وارننگ
بیجنگ ۔ 25 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) چین کی وزارت دفاع نے امریکی جیٹ طیاروں کو مشرقی بحیرہ چین میں خطرناک شکل میں روکے جانے سے متعلق دعوے کی تردید کی ہے اور واشنگٹن انتظامیہ سے چین کی حدود سے دْور رہنے کی اپیل کی ہے۔وزارت دفاع کے ترجمان رِن گوچیانگ نے جاری کردہ تحریری بیان میں کہا ہے کہ چینی پائلٹوں نے “قانونی ، ضروری اور پیشہ وارانہ “کاروائی کی ہے۔ امریکی فورسز کو مشرقی بحیرہ چین کی غیر محفوظ، پیشہ واریت کے منافی اور غیر دوستانہ فوجی کاروائیوں کو بند کرنا چاہیے۔رِن نے کہا ہے کہ اتوار کے روز مشرقی بحیرہ چین کی فضائی حدود کے قریب امریکی فضائیہ کے جاسوس طیارے کی نشاندہی کی گئی جس کے بعد چینی پائلٹوں نے قواعد کی ضرورت کے تحت اور قوانین سے ہم آہنگ شکل میں ان طیاروں کو آگے بڑھنے سے روک دیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT