Saturday , August 19 2017
Home / دنیا / چین میں انسداد دہشت گردی کے متنازعہ قوانین متعارف

چین میں انسداد دہشت گردی کے متنازعہ قوانین متعارف

بیجنگ ۔ 28 ڈسمبر (سیاسست ڈاٹ کام) چین میں انسدادِ دہشت گردی کے نئے متنازعہ قوانین متعارف کروائے گئے ہیں اور حکومت کا کہنا ہے کہ یہ قوانین بڑھتے ہوئے خطرات کا مقابلہ کرنے کے لیے ضروری ہیں۔ اتوار کو چینی مقننہ نے جن قوانین کی منظوری دی ان کے تحت انسدادِ دہشت گردی کا ایک نیا ادارہ اور نئی انسدادِ دہشت گردی فورس قائم کی جائے گی۔ ناقدین کا کہنا ہے کہ ان قوانین کا دائرہ عمل بہت وسیع ہے اور انھیں حکومت کے مخالفین اور مذہبی اقلیتوں کے خلاف استعمال کیا جا سکتا ہے۔ نئے قانون کے تحت چین میں اب انسدادِ دہشت گردی کا ایک ہی ادارہ ہوگا جو ملک کی عوامی تحفظ کی وزارت کے مطابق ’دہشت گردوں اور ان کی سرگرمیوں کی نشاندہی اور ملک گیر سطح پر انسدادِ دہشت گردی کی کارروائیوں کے لیے رابطہ کاری کا ذمہ دار ہوگا۔‘ ان قوانین کے تحت ملک میں ایک نیشنل انٹیلیجنس سینٹر کے قیام کا بھی اعلان کیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ جہاں چینی فوج کو بیرونِ ملک انسدادِ دہشت گردی کی کارروائیوں کی اجازت دی گئی ہے وہیں پولیس کو ’ہنگامی حالات‘ میں بندوق یا چاقو سے مسلح حملہ آوروں پر گولی چلانے کا اختیار بھی دیا گیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT