Wednesday , May 24 2017
Home / دنیا / چین میں خون کی ندیاں بہادینے ایغور جنگجوؤں کا اعلان

چین میں خون کی ندیاں بہادینے ایغور جنگجوؤں کا اعلان

ویڈیو فلم کے اجراء پر اقوام متحدہ سے حکومت کی امداد طلبی ، ارومقی میں فوجی مشقیں
بیجنگ ۔ /2 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) پریشان حال چین آج دہشت گردی کے خلاف جنگ کیلئے عالمی ادارہ سے اشتراک و تعاون پر آمادہ ہوگیا ۔ جبکہ ایغور نسلی اقلیت کے جنگجؤں میں گڑبڑ زدہ چینی صوبہ ژی جوانگ میں وطن واپس ہوکر وہاں خون  کی ندیاں بہادینے کا انتباہ دیا ۔ وزارت خارجہ کے ترجمان گینگ شوانگ نے کہا کہ وہ اس بات پر زور دینا چاہتے ہیں کہ حالیہ برسوں میں مشرقی ترکستان کی دہشت گرد افواج جن کی نمائندگی ای ٹی آئی ایم (مشرقی ترکستان اسلامی تحریک) کرتی ہے ۔ اپنے جنگجوؤں کو تصادم کے علاقوں میں روانہ کررہی ہے اور ان کا اتحاد مضبوط ہورہا ہے جو بین الاقوامی دہشت گرد افواج کے ساتھ ہے ۔ اس کے نتیجہ میں اس علاقہ اور متعلقہ ممالک کے استحکام اور صیانت کو شدید خطرہ لاحق ہوگیا ہے ۔ انہوں نے تفصیلات کا انکشاف کئے بغیر کہا کہ ہم مشرقی ترکستان دہشت گرد افواج کے خلاف جنگ جاری رکھنے کیلئے بین الاقوامی برادری کے ساتھ مشترکہ جدوجہد کیلئے تیار ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ ای ٹی آئی ایم جن جیانگ اور دیگر صوبوں میں پرتشدد کارروائیاں کرچکی ںہی اور چین کی صیانت اور استحکام کیلئے سنگین خطرہ بن گئی ہے ۔ پیر کے دن جاری کردہ ویڈیو کلب میں ایغور نسلی اقلیت کے جنگجوؤں کو جو دولت اسلامیہ سے مربوط ہیں ۔ وطن واپس ہونے اور وہاں خون کی ندیاں بہادینے کا عہد کرتے ہوئے دکھایا گیا ہے ۔ مارہین کا کہنا ہے کہ یہ چین کو دولت اسلامیہ کی اولین دھمکی ہے ۔ ایغور زبان میں تقریر کرتے ہوئے ویڈیو میں ایک جنگجو کو دکھایا گیا ہے جس نے کہا کہ مجبور افراد کی آنکھوں سے جو آنسو بہتے ہیں ہم اس کا انتقام خون کا ندیاں بہاکر لیں گے انشاء اللہ ۔ یہ ویڈیو ایک ایسے وقت جاری کیا گیا ہے جبکہ چینی افواج ژنگ جیانگ کے دارالحکومت ارومقی میں فوجی مشقیں کررہی ہیں ۔ مبینہ طور پر حکومت چین نے ان مشقوں کیلئے لڑاکا طیارے اور ہیلی کاپٹر بھی تعینات کئے ۔ ترکی بولنے والے ایغور مسلمان ژنگ جیانگ میں اکثریت رکھتے ہیں ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT