Saturday , September 23 2017
Home / دنیا / چین میں پٹرول و ڈیزل سے چلنے والی کاروں پر امتناع کا منصوبہ

چین میں پٹرول و ڈیزل سے چلنے والی کاروں پر امتناع کا منصوبہ

بیجنگ 11 ستمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) دنیا کی سب سے بڑی آٹو موبائیل مارکٹ سمجھے جانے والے چین کی جانب سے امکان ہے کہ پٹرول اور ڈیزل کی کاروں پر امتناع عائد کردیا جائیگا اور الیکٹرک گاڑیوں کی حوصلہ افزائی کی جائیگی ۔ کہا گیا ہے کہ یہ فضائی آلودگی پر قابو پانے اور ٹریفک رکاوٹوں کو دور کرنے کیلئے ایسا کرنے کا منصوبہ ہے ۔ چین کے نائب و زیر صنعت و اطلاعات ژن گئیوبن نے کہا کہ ان کے ملک نے ایک ریسرچ شروع کیا ہے تاکہ وہ ٹائم ٹیبل تیار کیا جاسکے جس کے مطابق مرحلہ وار انداز میں پٹرول اور ڈیزل سے چلنے والی کاروں کی تیاری اور ان کی فروخت کو ختم کیا جاسکے ۔ حالانکہ انہوں نے ابھی اس پروگرام کے تعلق سے تفصیلات نہیں بتائیں تاہم کہا کہ ان اقدامات سے یقینی طور پر اس شعبہ کی ترق یمیں تبدیلیاں آئیں گی ۔ اس منصوبہ کوقطعیت دینے فرانس اور برطانیہ کے فیصلوں کے مطابق کام کیا جا رہا ہے ۔ ان ممالک میں پہلے ہی سے روایتی فیول پر چلنے والی کاروں کی تیاری اور ا ن کی فروخت کو روکنے کے منصوبوں کا اعلان کیا جاچکا ہے ۔ چین کے کئی شہروں بشمول بیجنگ اور شنگھائی میں پہلے ہی سے نئی کاروں کی فروخت پر کئی تحدیدات عائد کردی گئی ہیں تاکہ فضائی آلودگی پر قابو پایا جاسکے ۔ اس کے علاوہ ان دونوں شہروں میں ٹریفک کے بھی کئی مسائل ہیں جن پر قابو پانے یہ اقدامات کئے جا رہے ہیں۔ چین کے وزیر نے یہ بیان ایسے قت میں دیا ہے جب کئی ممالک میں گیس سے چلنے والی گاڑیوں پر بھی تحدیدات عائد کی جا رہی ہیں تاکہ ان سے خارج ہونے والی گیسوں اور آلودگی پر قابو پایا جاسکے ۔ جاریہ سال جولائی میں فرانس کے وزیر نکولس ہولٹ نے اعلان کیا تھا کہ فرانس میں 2040 تک پٹرول اور ڈیزل سے چلنے والی کاروں کی فروخت بند کردی جائیگی تاکہ پیرس ماحولیاتی معاہدہ کے تحت اس کے عہد کی پابندی ہوسکے ۔ اسی مہینے برطانوی حکومت نے بھی اسی طرح کے منصوبے کا اعلان کیا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT