Friday , August 18 2017
Home / دنیا / چین کی فی خاندان دو بچوں کی پالیسی پر عوام کی سردمہری

چین کی فی خاندان دو بچوں کی پالیسی پر عوام کی سردمہری

بیجنگ ۔ 17 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) چین میں ایک خاندان ایک بچہ پالیسی سے دستبرداری اختیار کرتے ہوئے ایک خاندان دو بچے کی پالیسی کا اعلان کیا تھا لیکن ایسا معلوم ہوتا ہیکہ چینی عوام ایک خاندان ایک بچے کی پالیسی کے عادی ہوچکے ہیں۔ دوسری طرف چین دنیا کے کچھ مہنگے ترین ممالک میں شمار کیا جاتا ہے اور نوجوان طبقے نے اسی لئے حکومت کی اس نئی پالیسی پر کسی خاص دلچسپی کا مظاہرہ نہیں کیا۔ سرکاری طور پر منعقد کئے گئے ایک سروے کے بعد یہ بات سامنے آئی۔ سرکاری اخبار چائنا یوتھ ڈیلی کی جانب سے سروے منعقد کیا گیا تھا جہاں تقریباً 3000 افراد سے جن میں زائد از نصف تعداد خواتین کی تھی، کے مطابق 46 فیصد افراد نے دوسرا بچہ پیدا کرنے کیلئے آمادگی کا اظہار کیا تھا لیکن 52 فیصد افراد ایسے تھے جنہیں یہ اندیشہ تھا کہ اگر انہوں نے ایسا کیا تو ان کا معیار زندگی مزید پستی کی جانب چلا جائے گا۔ چین نے آنے والے کچھ دہوں کیلئے اپنی ایک مضبوط منصوبہ بندی کی تھی جس میں چین کی آبادی میں اضافہ کرتے ہوئے ایک مستحکم لیبر فورس تیار کرنا بھی شامل ہے۔ تاہم حکومت کی ایک خاندان دو بچہ کی اس نئی پالیسی پر عوام کی سردمہری نے چین کے منصوبوں پر فی الوقت تو پانی پھیر دیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT