Tuesday , September 26 2017
Home / شہر کی خبریں / !ڈاکٹرس کی دھوکہ دہی اور لاپرواہیاں

!ڈاکٹرس کی دھوکہ دہی اور لاپرواہیاں

حیدرآباد 6 نومبر (ایجنسیز) پیشہ طب میں لاپرواہی، دھوکہ دہی کوئی نہیں بات نہیں ہے۔ دی ورلڈ میڈیکل اسوسی ایشن

(WMA) نے اس سال رشوت خوری کے الزامات کا سامنا کرنے والے ڈاکٹر کیتن دیسائی کے صدر کی حیثیت سے تقرر عمل میں لایا۔ ایک خانگی میڈیکل کالج سے رشوت قبول کرنے کی پاداش میں اس ڈاکٹر کو سال 2010 ء میں قید کی سزا دی گئی تھی۔ اس سال جولائی میں مہدی پٹنم میں واقع آنکھوں کا سرکاری دواخانہ سروجنی دیوی آئی ہاسپٹل غلط سرجری کے سبب 13 افراد اپنی بینائی کھو بیٹھے۔ آنکھوں میں ڈالے جانے والے آئی ڈراپس جوکہ ملاوٹ شدہ تھے سے انفیکشن پیدا ہونے کی وجہ بتائی گئی۔ جاریہ سال کے اوائل میں آئی ٹی ملازم نکھل ریڈی کے پیر کی ایکسٹنشن سرجری کی گئی جس کے بعد مریض چلنے کے قابل نہ رہا۔ ڈاکٹر چندرا بھوشن آرتھوپیڈک سرجن گلوبل ہاسپٹل جس نے یہ سرجری انجام دی تھی کو دو سال کے لئے خدمات سے معطل کردیا گیا۔ مریض نکھل کے والدین نے الزام عائد کیاکہ اس سرجری کے تعلق سے نکھل کو اندھیرے میں رکھا گیا اور اس پیچیدہ سرجری کے بارے میں کچھ بھی نہیں بتایا گیا۔ ڈاکٹرس کی غفلت اور لاپرواہی کے ایک اور واقعہ میں ایک اسکول ٹیچر کو بے ہوش کئے جانے کے بعد اس کی موت واقع ہوگئی جبکہ اس کو دیا جانے والا انستھیسیا ناکام ہوگیا۔ جب مریض انیستھیسیا کے اثر سے واپس نہیں آیا۔ ڈاکٹر نمرتا سروشٹی آئی وی ایف سنٹر سکندرآباد نے مریض کے شوہر سے کہاکہ وہ اپنی بیوی کو کسی دیگر ہاسپٹل منتقل کردے اور اس طرح اس ڈاکٹر نے اس کیس سے اپنا دامن جھاڑ لیا۔ ڈاکٹر نمرتھا جوکہ اس کلینک کی صدرنشین ہیں پر پریکٹس کرنے سے پانچ سال کے لئے پابندی عائد کردی گئی ہے جبکہ یہ ڈاکٹر پہلے بھی مادر رحم میں دیگر جوڑے کے لئے بچے کی پیدائش (سروگیٹس) پر تاحیات امتناع کا سامنا کررہی ہیں۔ اس طرح غیر ضروری اپنڈیسٹز آپریشن کرنے کی پاداش میں ڈاکٹر ٹی منوج کمار اور دیگر سات ساتھی ڈاکٹرس کو تین ماہ کے لئے خدمات سے معطل کردیا گیا جبکہ یہ تمام کریم نگر کے دیہی علاقوں کے عوام کے غیر ضروری اپنڈیسٹز آپریشن کررہے تھے۔ بتایا گیا کہ ان ڈاکٹرس نے 580 سے زائد غیر ضروری آپریشنس انجام دیئے جن میں 1238 آپریشنس بچوں پر کئے گئے۔ اس سلسلہ میں دیگر دو ڈاکٹرس ٹی سریش کمار اور گنیش کو کریم نگر سے گرفتار کیا گیا۔ یہ ڈاکٹرس آپریشنس کے لئے 9000 روپئے معاوضہ لیتے تھے۔

TOPPOPULARRECENT