Sunday , September 24 2017
Home / اضلاع کی خبریں / ڈاکٹرس کی لاپرواہی سے نومولود لڑکی فوت

ڈاکٹرس کی لاپرواہی سے نومولود لڑکی فوت

سرکاری دواخانہ کے روبرو رشتہ داروں کا احتجاج
نظام آباد:11؍ اگست ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) سرکاری دواخانہ نظام آباد میں ڈاکٹروں کی لاپرواہی کی وجہ سے زچگی کے بعد ثنا ء فاطمہ نامی خاتون کو لڑکی تولد ہو ئی اور یہ فوت ہوگئی جس پر اس بات کی اطلاع ملنے پر رشتہ داروں نے شدید احتجاج کرتے ہوئے ڈاکٹروں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ۔ جبکہ اس واقعہ کے بعد زچہ کی طبیعت بگڑ جانے پر خانگی دواخانہ میں شریک کرایا گیا ۔ تفصیلات کے بموجب ضلع نظام آباد کے کوپرگہ دیہات سے تعلق رکھنے والے سہیل خان کی اہلیہ ثناء فاطمہ کو آج ڈیلیوری کیلئے جمعرات کی رات 2 بجے سرکاری دواخانہ نظام آباد میں شریک کرایا تھا آج صبح اس خاتون کو لڑکی تولد ہوئی ۔ ڈاکٹروں نے لڑکی فوت ہونے کے بارے میں بتانے پر سہیل خان کے رشتہ دارو ں نے احتجاج کرنا شروع کیا اور بتایا کہ ڈاکٹر وں نے ڈیلیوری کے دوران لاپرواہی کی جس کی وجہ سے نومولود فوت ہوگئی ۔ اس واقعہ کی اطلاع ثناء فاطمہ کو دی گئی جس پر یہ خبر سن کر ثناء فاطمہ کی حالت تشویشناک ہوگئی اور ثناء فاطمہ کی طبیعت بگڑ جانے پر اسے خانگی دواخانہ منتقل کیا گیا اور اس خاتون کی حالت تشویشناک ہونے پر ڈاکٹروں نے آئی سی یو میں بھرتی کروایا ۔ اس واقعہ کی اطلاع ملتے ہی صدر ضلع اقلیتی ڈپارٹمنٹ صدر سمیر احمد سرکاری دواخانہ پہنچ کر احتجاج کرنا شروع کیا ۔ سرپنچ کوپر گہ سلیم پٹیل بھی یہاں پہنچ کر اس واقعہ کے بارے میں تفصیلات حاصل کی ۔ احتجاج کے دوران رکن اسمبلی نظام آباد رورل باجی ریڈ ی گوردھن سرکاری دواخانہ میں موجود تھے اور اس واقعہ کے بارے میں تفصیلات حاصل کرتے ہوئے ڈی ایم اینڈ ایچ او اس خصوص میں اقدامات کرنے کی ہدایت دی ۔ ضلع کلکٹر ڈاکٹر یوگیتارانا نے بھی اس بارے میں تفصیلات حاصل کرتے ہوئے ضروری اقدامات کرنے کا ارادہ ظاہر کیا۔

 

Top Stories

TOPPOPULARRECENT