Sunday , August 20 2017
Home / اضلاع کی خبریں / ڈبل بیڈروم اسکیم سے مستحقین محروم

ڈبل بیڈروم اسکیم سے مستحقین محروم

عادل آباد /4 اپریل ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) ریاستی حکومت کی جانب سے جاری کردہ جی او نمبر 10 کے تحت مواقعات کی سطح پر گرام سبھا اور بلدی حدود میں موجودہ وارڈز میں عوامی اجلاس مقصد کرتے ہوئے مستحق افراد کی نشاندہی کے ذریعہ ڈبل بیڈروم مکانات الاٹ کرنے کی ہدایت دی گئی تھی جس کو ضلع انتظامیہ نظر انداز کرتے ہوئے ریاستی وزیر کی ایما پر سرمایہ کار افراد کو ڈبل بیڈروم فراہم کرنے کا الزآم سینئیر کانگریس قائد و سابق ریاستی وزیر مسٹر سی رامچندر ریڈی نے عائد کیا ۔ موصوف مستقر عادل آباد میں دفتر ضلع کلکٹریٹ کے روبرو کانگریس کی جانب سے منعقدہ احتجاجی دھرنا سے مخاطب تھے ۔ موصوف نے بلدی حلقہ کے جملہ 36 وارڈز کے مستحق کے گھر افراد کو اس ڈبل بیڈروم اسکیم میں محروم کرنے کا الزام عائد کیا ۔ قبل از شریمتی گنگابھوانی ، نرسنگ راؤ ، سعید خان نے اپنے خطاب میں ریاستی وزیر پر الزام عائد کریت ہوئے کہا کہ موصوف اپنے ایجنٹوں کے ذریعہ فی مکان کی خاطر ایک تا دیڑھ لاکھ روپئے وصول کر رہے ہیں ۔ اس موقع پر انہوں نے مقامی تحصیلدار پر رشوت خوری کا جہاں ایک طرف الزام عائد کیا وہیں دوسری طرف ضلع کلکٹر کو ریاستی وزیر کا مرید قرار دیا ۔ جبکہ ٹاون کمیٹی صدر مسٹر ساجد خان نے اپنے خطاب میں ریاستی حکومت کی کارکردگی پر سخت تنقید کریت ہوئے کہا کہ پنچایت چوک ، امبیڈکر چوک ، شیواجی چوک ، گاندھی چوک ، گرلز ہائی اسکول چوراستہ ، جیوتی پھولے چوک ، نیتاجی چوک ، ہنوما چوک ، ونائیک چوک ، این ٹی آر چوک ، نیو بس اسٹانڈ اور دیوی چند چوک کے سرمایہ کار تجارت پیشہ افراد جن کے آر سی سی کے منتخبہ مکانات موجود ہیں ۔ ان افراد کی نشاندہی ڈبل بیڈروم فراہم کرنے کی غرض کی گئی ہے ۔ اس موقع پر انہوں نے محلہ جات کے چند افراد کے ناموں کا بھی تذکرہ کیا اور ایک ہی افراد سے خاندان کے چار افراد کے نام ڈبل بیڈروم اسکیم میں موجود ہونے کا انکشاف کیا ۔ اپنے خطاب کو جاری رکھتے ہوئے مسٹر ساجد خان نے ٹی آر ایس قائدین پر الزام عائد کیا کہ وہ دو لاکھ روپئے حاصل کرتے ہوئے حکومت کی ڈبل بیڈروم اسکیم کی منظوری دلا رہے ہے ں۔ سروے نمبر 110 میں ریاستی وزیر مسٹر جوگو رامنا کی ایما پر ضلع انتظامیہ کی جانب سے رہائشی مکانات کو منہدم کرنے کا بھی الزام عائد کیا ۔ شادی مبارکب اسکیم میں پڑوسی ریاست کے افراد کا آدھار کارڈ بناتے ہوئے 51 ہزار روپئے کی اسکیم میں نصف رقم ٹی آر ایس قائدین کے حصول کا بھی الزام عائد کیا ۔ کانگریس حکومت کے بدولت ریاست تلنگاہن کا قیام عمل میں لایا گیا ۔ انتخابات کے دوران وعدوں کو فراموش کرنے کا چیف منسٹر پر الزام عائد کیا ۔ اس احتجاجی دھرنا میں مستقر کے مختلف محلہ جات سے تعلق رکھنے والے سینکڑوں مرد وخواتین نے حصہ لیا ۔ اس موقع پر مسرس ناگیش ، ایم اے شکیل ، محمد مرتضی ، Zafiullah khan کے علاوہ دیگر قائدین بھی موجود تھے ۔ بعد ازاں کلکٹریٹ کانفرنس ہال پہونچکر جوائنٹ کلکٹر مسٹر ابنار کو تحریری یادداشت پیش کی گئی ۔

TOPPOPULARRECENT