Wednesday , August 23 2017
Home / شہر کی خبریں / ڈبل بیڈ روم مکانات کی تعمیر کیلئے اقدامات

ڈبل بیڈ روم مکانات کی تعمیر کیلئے اقدامات

غیر متنازعہ اراضیات کی نشاندہی پر توجہ ۔ کمشنر بلدیہ کا اجلاس

حیدرآباد ۔ 13 فبروری (سیاست نیوز) گریٹر حیدرآباد حدود میں ڈبل بیڈ روم مکانات کی تعمیر میں حائل رکاوٹوں کو دور کرنے کے اقدامات کا آغاز ہوچکا ہے۔ سرکاری محکموں میں تال میل اور اراضیات کو ریونیو سے بلدیہ کے حوالے کرنے اور بغیر تنازعات کی اراضیات کی نشاندہی پر توجہ دی جارہی ہے۔ اس خصوص میں بلدیہ کمشنر ڈاکٹر بی جناردھن ریڈی نے ریونیو عہدیداروں کا ایک اعلیٰ سطحی اجلاس طلب کیا۔ ضلع حیدرآباد و رنگاریڈی کے ریونیو کے عہدیدار آر ڈی اوز کے علاوہ کلکٹر رنگاریڈی مسٹر رگھونندن راؤ اجلاس میں شریک تھے۔ کمشنر بلدیہ نے کہا کہ ریاستی حکومت کی جانب سے جی ایچ ایم سی حدود میں ایک لاکھ مکانات کی تعمیر کا نشانہ مقرر کیا گیا ہے۔ اس کیلئے ضروری اقدامات بالخصوص اہم ترین مسئلہ اراضی کی فراہمی کا ہے۔ انہوں نے ریونیو حکام کو مشورہ دیا کہ وہ فوری اراضیات کی نشاندہی کرکے ان کو بلدیہ کے حوالے کریں۔ انہوں نے بتایا کہ ایک لاکھ مکانات کی تعمیر کیلئے مختلف مقامات پر 500 ایکڑ اراضی درکار ہے۔ انہوں نے بتایا کہ شہر میں 1.466 نشاندہی کردہ مسلم علاقے ہیں اور ان میں کم از کم  2 لاکھ افراد بغیر مکان والے ہیں۔ ضلع رنگاریڈی میں ڈبل بیڈ روم اسکیم کیلئے 20 مقامات کی نشاندہی کی گئی ہے۔ تاہم ان میں صرف 2 مقامات ہی کو بلدیہ کے حوالے کیا گیا۔ بغیر کسی تنازعات کے مزید احکامات کو بلدیہ کے حوالے کیا جانا چاہئے۔ کمشنر بلدیہ نے کہاکہ ریونیو اور ہاؤزنگ ڈپارٹمنٹ سے عوامی نمائندوں کے تال میل اور متحدہ کوشش سے ہی مقررہ مدت میں ڈبل بیڈروم مکانات کی تعمیر کو یقینی بنایا جاسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مکانات کی تعمیر کے ساتھ ساتھ شہر میں بس شیلٹر، پارکس اور کچرے کی نکاسی اور منتقلی کے مراکز کی تعمیر بھی ضروری ہے۔ اس اجلاس میں ریونیو کے اعلیٰ عہدیدار موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT