Sunday , September 24 2017
Home / دنیا / ڈنمارک دنیا کا سب سے زیادہ خوش ملک، پاکستان کا ہندوستان سے بہتر موقف

ڈنمارک دنیا کا سب سے زیادہ خوش ملک، پاکستان کا ہندوستان سے بہتر موقف

نیویارک 17 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) دنیا کے خوش و خرم ترین ممالک کی فہرست میں ڈنمارک نے سوئٹزرلینڈ کو پیچھے چھوڑ دیا ہے۔ ویسے تو خوشی جانچنے کا کوئی پیمانہ نہیں ہے لیکن چہارشنبہ کے روز اقوام متحدہ کے سسٹین ایبل سلوشن نیٹ ورک اور دی ارتھ انسٹی ٹیوٹ، کولمبیا یونیورسٹی کی جاری ہونے والی ایک رپورٹ میں جائزہ لیا گیا ہے کہ دنیا کے کون سے ممالک ایسے ہیں جن کے عوام خوش ہیں اور اْن کی خوشی کی وجہ کیا ہے۔ گزشتہ سال سوئٹزر لینڈ کو دنیا کا خوش ترین ملک قرار دیا گیا تھا۔ اس رپورٹ کے مطابق شام اور افغانستان علاوہ سب صحارہ خطے کے آٹھ افریقی ممالک دنیا کے سب سے زیادہ ناخوش ممالک ہیں۔
اس معاملہ میں ہندوستان نے کوئی بہتری نہیں کی اور عالمی فہرست میں اس کا درجہ 118 ہے۔ جس کے مقابل پاکستان کا 92واں نمبر ہے۔ دنیا کے خوش ترین ممالک میں سرفہرست ڈنمارک، سوئٹزرلینڈ، آئس لینڈ، ناروے، فن لینڈ، کینیڈا، ہالینڈ، نیوزی لینڈ، آسٹریلیا اور سویڈن ہیں۔ گذشتہ سال ڈنمارک اس فہرست میں سوئٹزرلینڈ اور آئس لینڈ کے بعد تیسرے نمبر پر تھا۔ رپورٹ کے مطابق دنیا کے خوش ترین ممالک کی فہرست میں آخری دس ممالک میں مدغاسکر، تنزانیہ، لائبیریا، گینیا، روانڈا، بنین، افغانستان، ٹوگو، شام اور برونڈی شامل ہیں۔ امریکہ کا 13 واں، برطانیہ کا 23 واں، فرانس کا 32 واں اور اٹلی کا 50 واں نمبر ہے۔اقوام متحدہ کے سکریٹریجنرل بان کی مون کے مشیر اور ایس ڈی ایس این کے سربراہ جیفری ساشز نے خبررساں ادارے روئٹرز کو بتایا کہ ’’یہ میرے ملک امریکہ کیلئے ایک سخت پیغام ہے جو بہت امیر ہے اور گذشتہ 50 سال سے امیر سے امیر تر ہورہا ہے لیکن خوش نہیں ہورہا۔‘‘ امریکہ کیلئے واضح پیغام ہے۔ ایک ایسے معاشرے کیلئے جو صرف دولت کے پیچھے بھاگ رہا ہے، ہم غلط چیزوں کا پیچھا کر رہے ہیں۔ معاشرتی نظام زوال پذیر ہورہا ہے، معاشرتی اعتماد زوال پذیر ہورہا ہے، حکومت پر بھروسہ زوال پذیر ہورہا ہے۔ خیال رہے کہ اقوام متحدہ کی جانب سے اس نوعیت کی پہلی رپورٹ 2012ء میں جاری کی گئی تھی۔دنیا کے پانچ ممالک بھوٹان، ایکواڈور، اسکاٹ لینڈ، متحدہ عرب امارات اور وینزویلا میں خوشی کے وزیر بھی تعینات کئے گئے ہیں جس کا مقصد معاشرے میں خوشی اور مسرت کا فروغ ہے۔سابقہ رپورٹس میں یہ دلیل پیش کی گئی تھی کہ خوشی انسانی بہبود کا بہتر اشاریہ ہے۔ جبکہ آمدنی، غربت، تعلیم، صحت اور اچھی حکمرانی کی جانچ علیحدہ معاملہ ہے۔

TOPPOPULARRECENT