Friday , August 18 2017
Home / Top Stories / ڈونالڈ ٹرمپ ،اِسلام اور مسلمانوں سے ناواقف : صادق خاں

ڈونالڈ ٹرمپ ،اِسلام اور مسلمانوں سے ناواقف : صادق خاں

اعتدال پسند مسلمانوں کو نشانہ بنانے سے دہشت گردوں کو فائدہ ممکن
واشنگٹن۔ 11 مئی (سیاست ڈاٹ کام) ایسا نظر آرہا ہے کہ لندن کے نومنتخب میئر صادق خان اور امریکی صدارتی انتخابات کے ریپبلکن امیدوار ڈونالڈ ٹرمپ کے درمیان “امریکہ میں مسلمانوں کے داخلے” کے پس منظر میں الفاظ کی جنگ شروع ہوگئی ہے۔ منگل کے روز صادق خان کے دفتر کی جانب سے جاری بیان میں امریکی اخبار ’’نیویارک ٹائمس‘‘ میں شائع ہونے والے ڈونالڈ ٹرمپ کے اس بیان کا جواب دیا گیا ہے جس میں انہوں نے کہا تھا کہ وہ (صدر بننے کی صورت میں) لندن کے نئے مسلمان میئر کے امریکہ میں داخل ہونے کے لیے انہیں استثنائی طور پر اجازت دے دیں گے۔ صادق خان کا کہنا ہے کہ امریکی صدارتی امیدوار کا منصوبہ “اسلام سے ناواقفیت سے متصف ان کے ویژن” کا عکاس ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس سے دونوں ملکوں کے امن کو خطرہ ہوگا کیوں کہ ٹرمپ نے “اعتدال پسند مسلمانوں کو پکارا ہے جو اسلام کی مرکزی طور پر نمائندگی کرتے ہیں،

اس چیز کو دہشت گرد اپنے مفاد میں بھی استعمال کرسکتے ہیں”۔ لندن کے روزنامہ “ایوننگ اسٹینڈرڈ” سے گفتگو کرتے ہوئے صادق خان نے کہا کہ “یہ معاملہ میرے اکیلے سے متعلق نہیں بلکہ میرے دوست، خاندان اور مجھ سے ملتے جلتے پس منظر کے حامل دنیا کے کسی بھی مقام پر رہنے والے شخص سے متعلق ہے”۔ انہوں نے اس بات پر زور دیاکہ ” ڈونالڈ  ٹرمپ اور ان کے گرد موجود لوگ یہ سمجھتے ہیں کہ مغرب کی آزادانہ اقدار معتدل اسلام کے ساتھ نہیں چل سکتیں، لندن کے میئر کے انتخابات نے ثابت کردیا کہ یہ مفروضہ غلط ہے”۔ یاد رہے کہ ڈونالڈ ٹرمپ نے جو اناپ شناپ بیانات دیئے تھے، صادق خاں کے میئر بننے کے بعد وہ بیانات خود ان پر اُلٹے پڑگئے۔ اسی لئے ماہرین سیاست ابتداء سے یہ کہتے آئے ہیں کہ ٹرمپ کے انپ شناپ بیانات انہیں (ٹرمپ) کو ایک دن ضرور ذلیل کریں گے۔ اس طرح اب صادق خاں نے انہیں آئینہ ضرور دکھایا ہے کیونکہ صادق خاں نہ صرف ہندوستانی نژاد برطانوی مسلمان ہیں بلکہ انہیں یہ بات کبھی گوارہ نہ ہوگی کہ اسلام کو بدنام کرتے ہوئے دنیا کے تمام مسلمانوں کی تضحیک کی جائے، لہذا ٹرمپ ہوش کے ناخن لیں۔ وہ اب تک امریکہ کے صدر نہیں بنے ہیں۔ صدر بننے سے قبل ان کے تیور ایسے ہیں تو صدر بننے کے بعد تو وہ بے قابو ہوجائیں گے۔

 

مسلم لیڈر یا مسلمانوں کا نمائندہ نہیں ہوں :صادق خان
لندن ۔ /11 مئی (سیاست ڈاٹ کام) نو منتخب لندن میئر صادق خان نے آج کہا ہے کہ وہ مسلمانوں کے لیڈر یا ترجمان نہیں ہیں بلکہ برطانوی دارالحکومت میں ہر شخص کی نمائندگی کرتے ہیں ۔ 45 سالہ صادق خان نے سٹی ہال آفس میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ وہ ایک بات بالکل واضح کرنا چاہتے ہیں کہ وہ مسلم لیڈر یا مسلمانوں کے ترجمان نہیں ۔ وہ لندن کے میئر ہیں اورسارے لندن کے عوام کی نمائندگی کرتے ہیں ۔ تاہم انہوں نے کہا کہ ان کے انتخاب سے یہ ثابت ہوچکا ہے کہ ایک مسلمان اور ساتھ ہی ساتھ مغربی انداز فکر کا حامل ہونا ممکن ہے ۔ مغربی اقدار کی اسلامی سے مطابقت ہے ۔انہوں نے امریکی امکانی صدارتی امیدوار ڈونالڈ ٹرمپ کے حالیہ ریمارکس پر کہ انہیں امریکہ میں داخلہ کیلئے استثنائی اجازت دی جاسکتی ہے ، صادق خان نے کہا کہ ٹرمپ انتہاپسندوں کے ہاتھوں میں کھیل رہے ہیں ۔ انہوں نے برطانیہ کے یوروپی یونین میں برقرار رہنے کی تائید کا بھی اعادہ کیا ۔

TOPPOPULARRECENT