Saturday , May 27 2017
Home / اداریہ / ڈونالڈ ٹرمپ کابینہ کی تیاریاں

ڈونالڈ ٹرمپ کابینہ کی تیاریاں

جلتا ہے نشیمن جو مرا آتشِ گل سے
اس آگ کو کچھ ٹھنڈی ہوا اور بڑھادے
ڈونالڈ ٹرمپ کابینہ کی تیاریاں
امریکہ میں صدر منتخب ہونے کے بعد ڈونالڈ ٹرمپ نے اب اپنی کابینہ کی تشکیل کی تیاریاں شروع کردی ہیں۔ ٹرمپ کی ٹیم کے ارکان امریکی محکمہ جات کے عہدیداروں کے ساتھ بھی تبادلہ خیال کرچکے ہیںاور مختلف امور کا جائزہ لیا جا رہا ہے ۔ ہر محکمہ میں کارکردگی پر غور ہو رہا ہے اور مستقبل کی حکمت عملی کے تعلق سے بھی تبادلہ خیال کیا جا رہا ہے ۔ امریکی محکمہ جات کو ٹرمپ کی پالیسیوں اور حکمت عملی سے واقف کروانے کا عمل شروع ہوچکا ہے ۔ مختلف شخصیتوں کے نام مختلف عہدوں کیلئے لئے جا رہے ہیں جنہیں ٹرمپ اپنی کابینہ میں ذمہ داریاں سونپنے کا منصوبہ رکھتے ہیں۔ ٹرمپ سے بیرونی قائدین کی ملاقاتیں بھی شروع ہوچکی ہیں۔ جاپان کے وزیر اعظم شینزو ابے نیویارک پہونچ گئے ہیں اور وہاں انہوں نے ٹرمپ سے ملاقات کرکے تبادلہ خیال کیا ہے ۔ سکریٹری آف اسٹیٹ ‘ ڈیفنس سکریٹری ‘ قومی سلامتی مشیر اور دوسرے اہم ترین عہدوں کیلئے ایسا لگتا ہے کہ ڈونالڈ ٹرمپ اور ان کی ٹیم نے کچھ افراد کا انتخاب کرنے کے تعلق سے ذہن تیار کرلیا ہے تاہم اس پر ابھی تبادلہ خیال چل رہا ہے ۔ تاہم ٹرمپ کے صدر امریکہ منتخب ہونے کے بعد سے ایسا لگتا ہے کہ امریکہ میں اسلام کے خلاف جذبات میں مزید شدت پیدا ہوتی جا رہی ہے ۔ ٹرمپ نے حالانکہ صدر منتخب ہونے کے بعد کہا تھا کہ مسلمانوں کے خلاف نفرت کا بازار گرم نہیں کیا جانا چاہئے اور انہیں نشانہ بنانے اور حملے کرنے کے واقعات کا تدارک ہونا چاہئے ۔ ٹرمپ کا یہ بیان نفرت کی اس مہم کو روکنے میں ناکام رہا ہے جس کو خود ٹرمپ نے اپنی انتخابی مہم کی بنیاد بنایا تھا ۔ ٹرمپ حالانکہ یہ اعتراف بھی کرتے ہیں کہ انتخابی مہم کا ماحول مختلف ہوتا ہے اور حکومت چلانا ایک الگ بات ہوتی ہے ۔ ٹرمپ کے حکومت سنبھالنے کی تیاریوں سے قبل ہی امریکہ میں جس طرح کا ماحول پیدا ہو رہا ہے اس کو روکنے کیلئے ٹرمپ کو کوشش کرنے کی ضرورت ہے ۔ انہیں اپنے اختیارات کا استعمال کرتے ہوئے حالات کو بہتر اور سازگار بنانے پر توجہ مرکوز کرنا چاہئے ۔ وہ جس طرح سے اپنی مہم کو کامیاب انداز میں چلا چکے ہیں انہیں اسی طرح مسلمانوں کے خلاف نفرت کے ماحول کو ختم کرنے کیلئے بھی کامیاب مہم چلانے کی ضرورت ہے ۔
کابینہ میں بھی ٹرمپ کو ایسے افراد کو زیادہ سے زیادہ نمائندگی دینے کی ضرورت ہے جو نفرت کی سیاست سے دور رہیں اور امریکہ میں ایک ایسا خیرسگالی کا ماحول تیار کرسکیں جس کی بنیاد پر وہاں سماج کے تمام طبقات کی یکساں ترقی کو یقینی بنایا جاسکے اور سبھی طبقات کے ساتھ مساوی سلوک کیا جائے ۔ کسی بھی طبقہ کو اس کے مذہب کی اساس پر امتیازی سلوک کا نشانہ بنانے سے گریز کیا جانا چاہئے ۔ خود کابینہ میں اور عہدوں کی تقسیم میں اس بات کا خاص خیال رکھنے کی ضرورت ہے کہ امریکہ جیسے معاشرہ میں تعصب اور تنگ نظری سے کام کرنے والوں کو موقع نہ ملنے پائے ۔ کابینہ کی تشکیل ایک اہم مرحلہ ہے اور اس کام کے آئندہ کئی برسوں تک اثرات مرتب ہوسکتے ہیں۔ ایسے میں پوری دیانتداری اور غیر جانبداری کے ساتھ کام کرنے کی ضرورت ہے ۔ ایسے عناصر کو اہم عہدوں سے دور رکھنا خود امریکہ کے مفاد میں ہوگا جو تنگ نظری اور تعصب کے ساتھ کام کرنے کو ترجیح دیتے ہیں۔ ایسے افراد کو کابینہ میں موقع دینے کی ضرورت ہے جو اصولوں کی بنیاد پر پوری دیانتداری اور غیر جانبداری کے ساتھ ایسا معاشرہ اور ماحول تیار کرنے کیلئے کام کریں جو امریکہ کو مزید ترقی دلا سکے اور جو مسائل اس کو درپیش ہیں اور دنیا کو درپیش ہیں ان کے حل کی سمت پیشرفت کو ترجیح دیں۔ ایسے افراد کو تعصب اور عصبیت سے پاک ہونے کی ضرورت ہے ۔ ایسے افراد کو زیادہ نمائندگی دینے کی ضرورت ہے جو امریکہ میں صدارتی انتخابی مہم کی تلخیوں کو فراموش کرتے ہوئے مثبت اور مستحکم ماحول تیار کرنے کیلئے پوری تندہی کے ساتھ کام کریں ۔
ڈونالڈ ٹرمپ کو یہ بھی سمجھنے کی ضرورت ہے کہ ان کی ذمہ داریاں صرف امریکہ تک محدود نہیں ہیں۔ انہیں دنیا بھر میں امریکہ اور امریکی عوام کی شبیہہ کو بھی بہتر بنائے رکھنے پر توجہ دینے کی ضرورت ہے ۔ امریکہ کو دنیا کے معاملات میں ایک مرکزی مقام حاصل ہوتا ہے اور ٹرمپ انتظامیہ اور ان کی وزارت کیلئے ذمہ داریوں میں اب مزید اضافہ ہوگا اور انہیں دنیا بھر میں پائے جانے والے پیچیدہ اور کشیدہ حالات کے مطابق اپنے کام کاج کو مثبت پہلو کے ساتھ آگے بڑھانے پر توجہ کرنے کی ضرورت ہے ۔ اگر انتخابی مہم کی تلخیوں اور رنجشوں کو آگے بڑھنے کا موقع فراہم کیا گیا اور تعصب و تنگ نظری کی سیاست کو فروغ دیا گیا تو امریکہ کی جو شبیہہ دنیا بھر میں ہے وہ متاثر ہوکر رہ جائیگی اور دنیا بھر کے ماحول کو مزید پراگندہ کرنے کا ان عناصر کو موقع مل جائیگا جو دنیا کا امن غارت کرنے کیلئے اپنے ایجنڈہ پر عمل پیرا ہیں۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT