Saturday , September 23 2017
Home / دنیا / ڈوکلام پر چین کوئی مفاہمت نہیں کرے گا : تجزیہ نگار

ڈوکلام پر چین کوئی مفاہمت نہیں کرے گا : تجزیہ نگار

بیجنگ ۔ 10 اگست (سیاست ڈاٹ کام) چین کی پیپلز لبریشن آرمی (PLA) کے تجزیہ نگاروں کا کہنا ہیکہ ڈوکلام تنازعہ پر چین کسی بھی مفاہمت کیلئے تیار نہیں ہے۔ یہاں موجود ہندوستانی صحافیوں کیلئے ایک پروپگنڈہ لانچ کرتے ہوئے انہیں یہ سمجھانے کی کوشش کی گئی کہ ہندوستان نے چین کی قرارداد کو سمجھنے میں غلطی کی ہے اور یہی وجہ ہے کہ ایک ایسے علاقہ میں جو چین کی سرحد کا حصہ ہے، ہندوستانی فوجوں کو بھیج دیا۔ یاد رہیکہ سکم سیکٹر کے ڈوکلام علاقہ میں ہند۔ چین کے درمیان تنازعہ پیدا ہوگیا ہے جس کا سلسلہ گذشتہ دو ماہ سے جاری ہے۔ جب ہندوستانی فوج نے چین کی پی ایل اے کو ایک سڑک کی تعمیر سے روک دیا تھا۔ دوسری طرف چین کا یہ ادعا ہیکہ وہ سڑک کی تعمیر اپنی سرحد کے اندر ہی کررہاہے اور یہ مطالبہ کیا کہ ہندوستانی فوج کو وہاں سے (ڈوکلام) فوری ہٹ جانا چاہئے۔ مزید دلچسپ بات یہ ہیکہ بھوٹان کا بھی دعویٰ ہیکہ ڈوکلام اس کا علاقہ ہے لیکن چین اس پر اپنی خودمختاری جتا رہا ہے لیکن چین نے یہ وضاحت بھی کی ہیکہ ڈوکلام پر چین کا بھوٹان سے کوئی تنازعہ نہیں ہے۔

بدعنوانیوں کا الزام، سری لنکا کے وزیرخارجہ مستعفی
کولمبو ۔ 10 اگست (سیاست ڈاٹ کام) سری لنکا کے وزیرخارجہ روی کرونا نائیکے کو بدعنوانیوں کے الزامات کا سامنا کرنے کے بعد اپنے عہدہ سے مستعفی ہونا پڑا۔ قبل ازیں انہیں ایک ایسے تاجر کیساتھ روابط رکھنے کا الزام کا سامنا تھا جس کیخلاف پہلے ہی سرکاری بانڈ کی فروخت میں بے قاعدگیوں کی تحقیقات چل رہی ہے۔ دریں اثناء 54 سالہ کرونا نائیکے نے پارلیمنٹ کو بتایا کہ وہ سری لنکا میں ایک نیا سیاسی کلچر تخلیق کرتے ہوئے اپنے عہدہ سے دستبردار ہورہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ انہیں پورا یقین ہیکہ اپوزیشن حکومت کے استحکام کو متزلزل نہیں کرسکے گی۔ انہوں نے بدعنوانیوں کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے استعفیٰ دیدیا اور کہا کہ وہ کسی احساس جرم کیساتھ مستعفی نہیں ہورہے ہیں بلکہ انہیں ایسا کرنے پر فخر ہے۔ 2015ء میں بانڈ فروختگی کے معاملہ کی تحقیقات دو سال سے جاری ہے اور گذشتہ ہفتہ ہی کرونا نائیکے پریسیڈنشیل کمیشن کے روبرو پیش ہوئے تھے۔ یہاں یہ بات قابل ذکر ہیکہ سری لنکا کے صدر میتری پالا سری سیناجو ملک سے بدعنوانیوں کا خاتمہ کرنے کے وعدہ پر ہی برسراقتدار آئے تھے، اب کرونا نائیکے کیخلاف کارروائی کرنے کیلئے زبردست دباؤ میں ہیں۔

TOPPOPULARRECENT