Thursday , September 21 2017
Home / Top Stories / ’’ڈوکلم میں ہند ۔ چین تعطل کے بشمول ساری دنیا پر سنگین نتائج کا انتباہ

’’ڈوکلم میں ہند ۔ چین تعطل کے بشمول ساری دنیا پر سنگین نتائج کا انتباہ

دو نیوکلیئر طاقتوں میں رسہ کشی سے امریکی مفادات داؤ پر، ٹرمپ انتظامیہ کو سفارتی مساعی تیار رکھنے سی آئی اے کے سابق تجزیہ نگار کا مشورہ

واشنگٹن۔ 9 اگست (سیاست ڈاٹ کام) امریکی جاسوس ادارہ ’’سی آئی اے‘‘ کے ایک سابق تجزیہ کار نے آج کہا کہ سکم سیکشن کے ڈوکلم علاقہ میں ہندوستان اور چین کے درمیان پیدا شدہ تعطل کے بشمول امریکہ ساری دنیا کیلئے تشویشناک نتائج برآمد ہوں گے چنانچہ اس سے نمٹنے کیلئے ٹرمپ انتظامیہ کو اپنی سفارتی مساعی تیار رکھنا چاہئے۔ بروس ریڈل نے جو فی الحال واشنگٹن کے مفکر ادارہ بروکنگس انسٹیٹیوٹ میں خدمات انجام دے رہے ہیں، کہا کہ ہندوستان اور چین دونوں ہی نے ہمالیائی علاقہ میں اپنی روایتی فورسیس کو ایک دوسرے کے دوبدو لاکھڑا کردیا ہے۔ ریڈل نے ’ڈیلی بیسٹ‘ کے تجزیاتی کالم میں لکھا ہے ’’ہند اور چین اب دونوں ہی نیوکلیئر طاقتیں ہیں اور اپنے نیوکلیئر اسلحہ سے لیس میزائیلوں کو بالترتیب بیجنگ اور نئی دہلی کے نشانہ پر رکھے ہوئے ہیں۔ یہ دونوں ہی بڑی معاشی طاقتیں بھی ہیں اور ان کے درمیان قابل لحاظ باہمی تجارت بھی ہے‘‘۔ ہندوستان اور چین کے درمیان ڈوکلم میں گزشتہ 50 دن سے تعطل جاری ہے جو دراصل اس علاقہ میں سڑک تعمیر کرنے والے چینی فوجیوں کو ہندوستانی فوج کی طرف سے روک دیئے جانے کے بعد پیدا ہوا ہے۔ بروس ریڈل نے کہا کہ ’’دونوں ملکوں کی فوجوں کا یہ آمنا سامنا ساری دنیا کے لئے تشویشناک عواقب کا حامل ہوسکتا ہے۔ کسی بھی فریق نے امریکی مداخلت کیلئے نہیں کہا ہے۔

اس کے باوجود امریکی مفادات یقینا داؤ پر لگے ہوئے ہیں‘‘۔ ریڈل نے لکھا کہ ’’یہ بھی ایک حسن اتفاق ہی ہے کہ بھوٹان میں چینی دراندازی اس وقت ہوئی جب وزیراعظم نریندر مودی وہائیٹ ہاؤز کا دورہ کررہے تھے۔ غالباً یہ چین کا دانستہ اقدام تھا‘‘۔ امریکی تجزیہ کار نے مزید لکھا کہ ’’واشنگٹن کو اپنی سفارتی مساعی تیار رکھنا چاہئے۔ وزارت خارجہ کے جنوبی ایشیائی شعبہ میں ہمیں تجربہ کار افراد کی ضرورت ہے اور اس منظر نامہ پر ہمیں ممکنہ حد تک بہترین سفارت کاروں کی ضرورت ہوگی۔ ہندوستان کے ساتھ فوجی تعلقات پر نظر رکھنے کی ضرورت ہے۔ جان ایف کنیڈی 1962ء میں تیار تھے اور آج ہمیں منظر سے پیچھے نہیں رہنا چاہئے۔ ریڈل نے بہت جلد منظر عام پر آنے والی اپنی کتاب میں دعویٰ کیا ہے کہ امریکہ کے سابق صدر جان ایف کنیڈی 1962ء کی ہند ۔ چین جنگ میں ہندوستان کی مدد کیلئے تیار تھے۔

TOPPOPULARRECENT